.

ریاض اور قطر نے عراق پر جنگ مسلط کر رکھی ہے: نوری المالکی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراق کے وزیر اعظم نوری المالکی نے سعودی عرب اور قطر پر شدید تنقید کرتے ہوئے الزام عائد کیا ہے کہ ریاض اور دوحہ خطے اور پوری دنیا میں دہشت گردی پھیلا رہے ہیں۔ انہوں نے سعودی عرب پر خاص طور پر سخت الفاظ میں تنقید کرتے ہوئے کہا کہ عراق میں دہشت گردی میں ملوث عناصر سعودی عرب کی گود میں پل رہے ہیں۔

ایک ٹی وی انٹرویو میں نوری المالکی کا کہنا تھا کہ سعودی عرب اور قطر نے عراق کے خلاف اعلان جنگ کر رکھا ہے۔ خیال رہے کہ نوری المالکی کی جانب سے سعودی عرب پر سخت ترین الفاظ میں یہ تنقید پہلی مرتبہ کی گئی ہے۔

نوری المالکی سنہ 2006ء کے بعد سے عراق کے اقتدار کا حصہ ہیں۔ ان کے سیاسی مخالفین ان پر مُلک میں سنی مسلک کے حامیوں کو کچلنے کا بھی الزام عائد کرتے ہیں۔

"فرانسیسی ٹیلی ویژن 24" کو دیے گئے ایک انٹرویو میں وزیر اعظم المالکی نے کہا کہ عراق کو عدم استحکام سے دوچار کرنے والے گروپوں کو سعودی عرب اور قطر کی پُشت پناہی حاصل ہے۔ ان دہشت گرد گروپوں سے وابستہ کچھ غیرملکی عناصر ہیں اور کچھ کا تعلق اندرون ملک سے ہے جو بیرونی اشاروں پراپنے ایجنڈے کو آگے بڑھا رہے ہیں۔