.

بشارالاسد کا پہلی مرتبہ جنگ زدہ شہر کا دورہ

شامی صدر دمشق کی حد تک محصور ہو کر رہ گئے ہیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شام کے صدر بشارالاسد نے تین سال پر پھیلی طویل خانہ جنگی سے متاثرہ شہریوں اور بے گھر ہونے والے افراد کو دیکھنے کیلیے دارالحکومت دمشق کے شمال مشرق میں واقع شہر ادرا کا دورہ کیا ہے۔ شامی صدر کا تین برسوں کے دوران اس نوعیت کا دورہ بہت کم دیکھنے میں آیا ہے۔

سرکاری ٹیلی ویژن کے مطابق صدر کے دورے کا مقصد صوبہ دمشق میں بے گھر ہو جانے والے افراد کی حالات کا پتہ چلانا تھا۔ وہ متاثرین سے ان کی ضروریات کے بارے میں معلومات حاصل کرنے گئے تھے۔

واضح رہے بشارالاسد نے جس شہر کا دورے کیلیے انتخاب کیا ہے اسے دمشق کا دروازہ سمجھا جاتا ہے۔ اس شہر میں سرکاری فوج اور باغیوں کے درمیان مسلسل تصادم رہا ہے۔ شام کی صورت حال کی مانیٹڑنگ کرنے والی آبزرویٹری کے مطابق اس شہر سے متصل صنعتی پارک پر قبضے کی کوششیں ابھی جاری ہیں۔

بشارالاسد بہت کم اس طرح کے دوروں کیلیے دمشق سے باہر نکلتے ہیں، ان کی عوامی سطح پر آمد بھی کم ہی ہوتی ہے کیونکہ انہوں نے خود کو دمشق کے اندر تک محصور کر رکھا ہے۔ اس سے پہلے ماہ جنوری میں ایک مرتبہ بشارالاسد عوامی سطح پر نظر آئَے تھے۔

واضح رہے تین سال کی خانہ جنگی میں ایک لاکھ چالیس ہزار افراد ہلاک ہو چکے ہیں۔ جبکہ آئندہ صدارتی انتخاب کیلیے بشارالاسد ایک مرتبہ پھر امیدوار بننے کی خواہش رکھتے ہیں۔