.

مصر: فوجی بس پر حملہ، 1 افسر ہلاک، تین اہلکار زخمی

فوجی ترجمان نے حملے کا الزام اخوان المسلمون پر عاید کر دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصری فوج نے اخوان المسلمون پر الزام عاید کیا ہے کہ انہوں نے مصری دارالحکومت میں فوجی بس پر حملہ کر کے ایک افسر کو ہلاک اور تین اہلکاروں کو زخمی کر دیا ہے۔

فوجی ترجمان کی طرف سے جاری کیے گئے بیان کے مطابق دہشت گرد تنظیم اخوان المسلمون کے مسلح نقاب پوشوں نے مسلح افواج کی ایک بس پر حملہ کیا۔ جس کے نتیجے میں وارنٹ آفیسر یسری محمود محمد حسن ہلاک ہو گیا۔ اس حملے میں تین فوجی اہلکار بھی زخمی ہوئے ہیں۔

فوجی سربراہ فیلڈ مارشل عبدالفتاح السیسی کے متوقع صدارتی انتخابات میں حصہ لینے کی امکانات کے ماحول میں اسلامی عسکریت پسند اپنی مسلح کارروائیوں میں اضافہ کر رہے ہیں۔ توقع ہے کہ السیسی آئندہ چند دنوں میں اپنے صدارتی امیدوار بننے کا اعلان کر دیں گے۔

واضح رہے مصری حکومت فلسطینی تنظیم حماس کو بھی الزام دیتی ہے کہ یہ اخوان المسلمون کے ساتھ حالیہ چند برسوں سے مصر میں دہشت گردانہ کارروائیوں میں ملوث ہے۔

ایک روز قبل مصری فوج نے اعلان کیا ہے کہ اس نے مصر کے سرحدی علاقوں میں سمگلنگ کے لیے بنائی گئی 1370 سرنگیں ختم کی ہیں۔ جبکہ حماس اخوان کے ساتھ مل کر ایسی کارروائیاں کرنے کی تردید کرتی ہے۔