گولان پر اسرائیلی فائرنگ سے دو افراد جاں بحق

اسرائیل نے دونوں کو دہشت گرد اور مداخلت قرار دے دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیلی فوج نے جمعہ کے روز گولان کی چوٹیوں پر نشانہ بنائے دو افراد کو دہشت گرد اور مداخلت کار دے دیا ہے۔ یہ دونوں مشتبہ افراد اسرائیلی فوج کے بیان کے مطابق گولان کی پہاڑیوں کی طرف سے اسرائیل میں داخل ہونے کی کوشش کر رہے تھے۔

ایک اسرائیلی ویب سائٹ کے ذریعے سامنے آنے والے اسرائیلی فوج کے بیان کے مطابق ''دو مسلح افراد کو دیکھا گیا جو اسرائیل میں داخل ہونے کی کوشش کر رہے تھے اور سرحد پر اسرائیلی تنصیبات کو نقصان پہنچا رہے تھے ، انہیں دیکھتے ہی اسرائیلی فوج نے فائرنگ شروع کر دی اور دونوں کو نشانہ بنا لیا گیا۔

اس جاری کیے گئے بیان میں دونوں افراد کی حالت کے بارے میں کچھ نہیں بتایا گیا ہے، نہ ہی ان افراد کی شناخت بتائی گئی ہے۔ البتہ اسرائیل کی وائی نیٹ نامی ویب سائٹ نے دونوں افراد کے جانبر نہ ہونے کی اطلاع دی ہے۔

اسرائیلی فوج کی فائرنگ کا یہ واقعہ اسرائیل اور شام کے درمیان حالیہ دنوں پیش آنے والے واقعات میں سے ایک ہے۔ دس روز قبل بھی اسرائیل نے سڑک کنارے دھماکوں کے بعد فائرنگ کی تھی۔

واضح رہے اسرائیل نے گولان کی چوٹیوں کے علاقے میں 1200 مربع کلو میٹر کا علاقہ 1967 کی چھ روزہ جنگ کے دوران قبضے میں لے لیا تھا ، یہ علاقہ ابھی تک اسرائیل کے زیر قبضہ ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں