اہم شخصیت سمیت حزب اللہ کے گیارہ جنگجو گرفتار

بشار الاسد فوج کے گیارہ افسروں نے بغاوت کر دی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

شام میں باغیوں کی نمائندہ مسلح افواج جیش الحر نے صدر بشار الاسد کی حامی لبنانی شیعہ عسکریت پسند تنظیم حزب اللہ کے گیارہ جنگجوؤں کو حراست میں لینے کا دعویٰ کیا ہے۔ یرغمالیوں میں ایک اہم شخصیت بھی بتائی جاتی ہے۔

العربیہ ٹی وی کے مطابق جیش الحر کی سپریم کونسل کے رکن رامی دالاتی نے اپنے ایک بیان میں بتایا کہ ہمارے فوجی جوانوں نے حزب اللہ سے وابستہ اہم شخصیت سمیت گیارہ جنگجوؤں کو حراست میں لیا ہے، جنہیں جلد ہی میڈیا کے سامنے پیش کیا جائے گا۔ تاہم انہوں نے یہ وضاحت نہیں کی کہ حزب اللہ کے جنگجو کہاں سے اور کب پکڑے گئے ہیں۔

دالاتی نے بتایا کہ سرکاری فوج کی صفوں میں ایک مرتبہ پھر سے پھوٹ پڑی ہے جس کی وجہ سے علوی قبیلے سے تعلق رکھنے والے گیارہ فوجی افسر فرار کے بعد باغیوں سے آ ملے ہیں۔

شامی فوج میں پھوٹ کی خبریں ایک ایسے وقت میں سامنے آئی ہیں جب شام کے مختلف شہروں میں سرکاری فوج اور باغیوں کے درمیان گھمسان کی جنگ جاری ہے۔ بعض مقامات پر شامی فوج نے پیش قدمی کا بھی دعویٰ کیا ہے۔

شام سے ملنے والی اطلاعات کے مطابق اللاذقیہ کے شمالی علاقوں اور الترکمان پہاڑوں پر اسدی فوج نے بیرل بموں سے حملے کیے ہیں جن کے نتیجے میں بڑے پیمانے پر جانی نقصان کا خدشہ ظاہرہ کیا گیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں