.

بغداد:عراقی فورسز کے ساتھ لڑائی میں 40 جنگجو ہلاک

جھڑپ میں عراقی فوج کا ایک افسر مارا گیا،بھاری ہتھیاروں پر فورسز کا قبضہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراق کے دارالحکومت بغداد کے نزدیک سکیورٹی فورسز نے جھڑپوں میں چالیس سے زیادہ جنگجوؤں کو ہلاک کردیا ہے۔

عراق کی وزارت داخلہ نے جمعرات کو جاری کردہ ایک بیان میں بغداد کے جنوب مغرب میں واقع قصبے یوسفیہ جھڑپوں میں ان جنگجوؤں کی ہلاکت کا دعویٰ کیا ہے اور بتایا ہے کہ لڑائی میں ایک فوجی افسر بھی مارا گیا ہے۔سکیورٹی فورسز نے دو بھاری مشین گنیں ،پندرہ بندوقیں،پانچ گرینیڈ لانچرز اور دوسرے آلات قبضے میں لے لیے ہیں۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ داعش (دولت اسلامی عراق وشام) کے ارکان نے ایک فوجی کیمپ پر دھاوا بولنے کی کوشش کی تھی لیکن سکیورٹی فورسز نے ان کی اس کوشش کو ناکام بنا دیا ہے۔

یوسفیہ میں داعش کے جنگجوؤں اور عراقی سکیورٹی فورسز کے درمیان یہ جھڑپیں بغداد سے مغرب میں واقع دو اور علاقوں زوبا اور زیدان میں کئی روز کی لڑائی کے بعد ہوئی ہیں۔داعش کے جنگجوؤں نے مغربی صوبہ الانبار کے شہر فلوجہ اور بعض دوسرے قصبوں میں جنوری کے اوائل سے اپنا کنٹرول قائم کررکھا ہے اور ان کی تازہ لڑائی کے پیش نظر یہ کہا جارہا تھا کہ وہ دارالحکومت میں دراندازی کے لیے اس کے نزدیک واقع قصبوں اور دیہات میں ایک نیا محاذ کھول سکتے ہیں۔