.

حکومت کے انتہا پسند اتحادی امن مذاکرات کیخلاف ہیں: لیونی

دونوں فریق امن مذاکرات کے حق میں ہیں: انٹرویو میں گفتگو

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مشرق وسطی میں قیام امن کی خاطر امریکی سرپرستی میں ہونے والے مذاکرات کیلیے اسرائیلی مذاکرات کاروں کی سربراہ زیپی لیونی نے خوش امیدی کا اظہار کیا ہے، تاہم امن مذاکرات کے بارے میں اچھی امید لگانے کے باوجود انہوں نے کہا ہے کہ انتہا پسند طبقات میں مایوسی بڑھ رہی ہے۔ اسرائیل کی چیف مذاکرات کار نے ان خیالات کا اظہار ایک انٹرویو میں کیا ہے۔

زیپی لیونی کا کہنا ہے ''بنجمن نیتن یاہو کی حکومت میں ایسے لوگ ہیں جو ان کی امن کوششوں کو کمزور کر رہے ہیں، یہ لوگ امن نہیں چاہتے ہیں۔ '' ایک سوال کے جواب میں زیپی لیونی نے کہا انتہا پسندانہ خیالات رکھنے والی اور یہودی بستیوں کی تعمیر کی حامی تنظیم '' جیوش ہوم '' میری کوششوں کا رخ موڑنا چاپتی ہیں۔''

واضح رہے بنجمن نیتن یاہو کے اتحادیوں میں اکثریت انتہا پسندانہ خیالات کی حامل ہے، ان عناصر کا موقف اس وقت سامنے آیا جب اسرائیل نے مزید یہودی آباد کاروں کو اجازت دی کہ وہ فلسطینی علاقے میں جائیداد کا حق رکھتے ہیں۔ اسرائیلی وزیر دفاع موشے یعلون نے اتوار کے روز یہودی آباد کاروں کے مغربی کنارے میں مکانات کے حوالے سے منظوری دی ہے۔

اس سے پہلے اسرائیلی سپریم کورٹ نے پچھلے ماہ حکم دیا تھا کہ مقبوضہ فلسطینی علاقے کے قلب میں یہودی بستیاں قانونی اور ان کے رہائشی ملکیت کا جائز حق رکھتے ہیں۔ واضح رہے اس بارے میں قانونی تنازعہ سات سال سے چلا آ رہا تھا۔ وزیر انصاف زیپی لیونی نے امن مذاکرات کے حوالے سے کہا '' مجھے پورا یقین ہے کہ فریقین امریکی حوصلہ افزائی سے امن مذاکرات کو جاری رکھیں گے۔''

اسرائیل کے وزیر خارجہ کا موقف اس کے برعکس ہے۔ اسرائیلی سفیروں کے ساتھ ایک اجلاس کے دوران انہوں نے الزام لگایا تھا کہ '' فلسطینی امن عمل کو تیزی سے نقصان پہنچا رہے ہیں۔'' وزیر خارجہ کا کہنا تھا '' ہم امن معاہدے کے قریب تر تھے لیکن فلسطینیوں نے وعدوں کی خلاف ورزی کی۔''

دوسری جانب فلسطینی حکام نے کہا ہے کہ دونوں طرف کے نمائندوں نے اہم مذاکرات کے حوالے سے ایک اور ملاقات کی ہے۔ فلسطینی چیف مذاکرات کار صائب عریکات نے مقبوضہ یروشلم میں لیونی اور نیتن یاہو کے خصوصی نمائدے سے ملاقات کر کے امن عمل کے لیے بات کی ہے، تاہم اسرائیل کی جانب سے اس بارے میں فی الحال کچھ نہیں کہا گیا ہے۔ اسی سلسلے میں منگل یا بدھ کی شام دوبارہ ملاقات ہو سکتی ہے۔