.

مسلمانوں کے مسجد اقصی میں داخلے پر پابندی

پچاس سال سے کم عمر کے مسلمان مرد مسجد میں آ سکیں گے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اسرائیلی پولیس نے مسلمانوں کے قبلہ اول مسجد اقصی میں مسلمانوں کی آمد پیر کے روز محدود تر کر دی ہے۔ اسرائیلی پولیس حکام کے مطابق یہ اقدام ہفتے کے اختتام پر شروع ہونے والے پر تشدد واقعات کے بعد کیا گیا ہے۔

اسرائیلی پولیس کے ترجمان میکی روزن فیلڈ کے مطابق ''یروشلم کے رہائشی مسلمان مرد حضرات کے حوالے سےعمروں کی قدغن نافذ ہو گی اور پچاس سال سے کم عمر کے مسلمان مسجد اقصی میں داخل نہیں ہو سکیں گے، جبکہ 50 سال اور اس سے بڑی عمر کے لوگوں کو مسجد میں نماز پڑھنے کی اجازت ہو گی۔ ''

ترجمان پولیس نے کہا یہ ''حفظ ماتقدم کے تحت کیے جانے والے اقدامات سکیورٹی کی بگڑی ہوئی صورتحال کے پیش نظر کیے گئے ہیں۔'' واضح رہے اتوار کے روز پانچ افراد کو گرفتار کیا گیا ہے۔ پولیس حکام کا کہنا ہے کہ یہ گرفتاریاں ہونے والے تصادم کے بعد عمل میں لائی گئی ہیں۔

اسرائیلی پولیس کی طرف سے مسلمانوں پر پتھراو کرنے کا الزام لگایا ہے جبکہ سکیورٹی نے ہینڈ گرینڈز بھی استعمال کیے۔ مسلمانوں پر ان کے تیسرے مقدس ترین مقام میں داخلے اور ادائیگی نماز کی پابندی یہودی تہوار کے دنوں میں عاید کی گئی ہے۔