ایران: جوہری بم بنانے کی صلاحیت متاثر ہو گئی

اقوم محتدہ اس بارے میں جلد اپنی رپورٹ سامنے لائے گا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اقوام متحدہ ایک ایسی رپورٹ جاری کرے گی جس میں ایرانی جوہری بم بنانے کی صلاحیت غیر معمولی طور پر کم ہو گئی ہے۔ کیونکہ ایران نے اپنے ایسے مواد کو تحلیل کر دیا ہے جس کی بنیاد پر وہ یورینیم کو جوہری اسلحے کی سطح پر تیزی سے بروئے کار لاسکتا ہے۔

ایران کے چھ عالمی طاقتوں کے ساتھ ابتدائی جوہری معاہدے کے نتیجے میں ایران کو کچھ رعائیتیں دینی پڑی جن کے بدلے میں ایران پر عاید اقتصادی پابندیوں میں قدرے نرمی ہوئی ہے۔ چھ عالمی طاقتوں کی طرف سے ایرانی یورینیم کی سطح 20 فیصد تک رکھنے پر تشویش ظاہر کی گئی تھی۔ کہ یہ سطح تکنیکی اعتبار سے 90 فیصد افزودگی سے محض قدموں کے فاصلے پر ہے۔

ایران نے اتفاق کیا ہے کہ وہ اپنی 20 فیصد انرچمنٹ کو روک دے گا و اضح رہے 20 فیصد تک افزودگی کا درجہ ایک جوہری بم بنانے کیللیے کافی ہے۔

اقوام متحدہ کے ادارے کی اسی ہفتے اس بارے میں رپورٹ سامنے لانے والا ہے۔ اس حوالے سے یہ کہا جانا چاہیے کہ ایران اپنی یورینیم کی تحلیل سے متعلق اپنی ذمہ داریاں پوری کر چکا ہے، جبکہ مذاکراتی عمل جاری ہے۔

ایران کو ابتدائی جوہری معاہدے کے حوالے سے اپنی ذمہ داریاں جون تک مکمل کرنا ہیں۔ ایک عالمی سفارتکار کا کہنا ہے کہ ایران ان دنوں اپنی کمٹمنٹس پوری کرنے کے لیے کوشاں ہے کہ اسی صورت میں اسے چار اعشاریہ دو ارب ڈالر کی قسط کا انتظار ہے۔ بتایا گیا جوہری معاملات کی نگرانی کرنے والے بین الاقوامی ادارے کی رپورٹ کسی بھی وقت متوقع ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں