.

سعودی پاسپورٹ شناختی کارڈ سے مشروط

وزارت داخلہ کو فنگر پرنٹس فراہم کرنا بھی لازمی قرار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب میں آئندہ ان خواتین کو پاسپورٹ جاری نہیں کیا جائے گا، جن کے پاس سعودی شناختی کارڈ نہیں ہو گا۔ یہ اعلان ڈائریکٹر جنرل پاسپورٹس نے کیا ہے۔

اعلان میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ ایسی خواتین جن کے پاس پہلے سے پاسپورٹ موجود ہے مگر ان کے پاس شناختی کارڈ نہیں ہے، ان کے پاسپورٹس کی اب تجدید نہیں کی جائے گی۔

متعلقہ محکمے نے سعودی خواتین اور مردوں کو یہ ہدایت کی ہے کہ وہ اپنے فنگر پرنٹس وزارت داخلہ کے پاس رجسٹر کرائیں بصورت دیگر انہیں وزارت داخلہ کی خدمات سے بطور شہری مستفید نہیں ہو نے کا حق نہیں ہو گا۔

ڈائریکٹر جنرل پاسپورٹس میجر جنرل سلیمان الیحیی کا یہ بھی کہنا ہے '' یکم مئی سے کسی بھی ایسے شخص کو پاسپورٹ جاری نہیں کیا جائے گا، جس کے فنگر پرنٹس وزارت داخلہ کے پاس موجود نہیں ہوں گے