حلب میں بیرل بم حملوں میں دسیوں افراد ہلاک

حمص میں امدادی سرگرمیوں کے معاہدے کی متضاد اطلاعات

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

شام کے شہر حلب کے مضافات میں بشار الاسد کی وفادار فوج نے جنگی جہازوں سے بیرل بم حملے کیے ہیں جس کے نتیجے میں بڑے پیمانے پر عام شہریوں کے مارے جانے کی اطلاعات ہیں۔

باغیوں کی نمائندہ شھباء پریس کی جانب سے جاری ایک بیان میں بتایا گیا ہے کہ ہفتے کو سرکاری فوج کے جنگی طیاروں نے حلب کے نواحی علاقے "دارہ عزہ" پر بیرل بم حملے، میزائلوں اور توپخانے سے وحشیانہ گولہ باری کی ہے جس کے نتیجے میں دسیوں افراد ہلاک اور زخمی ہو گئے ہیں۔

شام کی جنرل انقلاب کونسل کے مطابق ہفتے کے روز حلب اور اس کے مضافات میں اسدی فوج کی بمباری سے 82 افراد مارے گئے تھے۔

کشیدگی کے باوجود حمص میں متاثرہ علاقوں میں امدادی سرگرمیوں کی جزوی بحالی کی کوششیں بھی جاری ہیں۔ العربیہ ٹی وی کے ذرائع کے مطابق اقوام متحدہ کی مساعی سے اپوزیشن اور اسدی فوج نے حمص کی بعض کالونی میں امدادی سامان کی فراہمی پر اتفاق کیا ہے۔ تاہم بعض ذرائع اس خبر کی تصدیق نہیں کر رہے۔ گذشتہ روز بھی متحارب فریقین میں چند گھنٹوں کے لیے جنگ بندی کرنے اور متاثرہ علاقوں میں امدادی سامان کی فراہمی کے لیے فریقین میں رابطے ہوئے تھے۔

خیال رہے کہ حمص میں متاثرہ شہریوں کے انخلاء اور ان کی امداد کے حوالے سے شامی حکومت اور اپوزیشن کے درمیان ایک عارضی سمجھوتہ ایک ماہ قبل طے پایا تھا، لیکن معاہدے کے اگلے ہی روز دو طرفہ فائرنگ سے اس کی خلاف ورزی شروع کر دی گئی تھی جس کا سلسلہ ابھی تک جاری ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں