.

قطر:محمود عباس/ خالد مشعل ملاقات، مفاہمتی معاہدہ زیر بحث

قاہرہ میں جنوری 2013 کے بعد یہ پہلی ملاقات ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

حماس کے سربراہ اور جلاوطن فلسطینی رہنما خالد مشعل اور فلسطینی اتھارٹی کے صدرمحمود عباس کی ملاقات قطر کے دارالحکومت میں پیر کے روز شروع ہوئی ہیں۔ غزہ اور مغربی کنارے میں حکمران فلسطینی جماعتوں کے درمیا ن ماہ مارچ کے اواخر میں طے پانے والے معاہدے کے بعد اعلی ترین رہنماوں کے درمیان یہ پہلی باضابطہ ملاقات ہے۔

فلسطینی اتھارٹی کے ذرائع کے مطابق دوحا میں مذاکرات بعد از دوپہر شروع ہو چکے ہیں۔ محمود عباس ایک روز پہلے امیر قطرشیخ تمیم بن حماد الثانی سے ملاقات کیلیے دوحا پہنچے تھے۔ پیر کو امیر قطر سے ملاقات سے پہلے انہوں نے ایک شادی کی تقریب میں بھی شرکت کی۔

بعد ازاں صدر محمود عباس کی حماس کے جلاوطن سربراہ خالد مشعل کے ساتھ سے ملاقات ہوئی۔ واضح رہے خالد مشعل پچھلے دوسال سے دوحا میں ہی مقیم ہیں۔ اس سے پہلے وہ شام میں قیام پذیر رہے، لیکن شام میں خانہ جنگی کے باعث دوحا منتقل ہو گئے۔

فلسطینی جماعتوں کے ان اہم ترین رہنماوں کے درمیان اس سے پہلے مرسی کے دور صدارت میں جنوری 2013 کے دوران قاہرہ میں بھی ایک ملاقات ہو چکی ہے۔ ایک روز پہلے غزہ میں حماس کے ترجمان نے آج کی ملاقات کا امکان ظاہر کیا تھا ۔ حماس کے ترجمان سامی ابو زہری کے مطابق ملاقات کا مقصد دونوں جماعتوں کے درمیان طے پانے والے مفاہمتی معاہدے پر عمل درآمد پر تبادلہ خیال کرنا ہے۔

دونوں فلسطینی جماعتوں کے درمیان مفاہمتی معاہدے پر اسرائیل نے سخت ردعمل ظاہر کیا تھا جبکہ امریکا نے بھی ناخوشی کا اظہار کیا تھا۔ اس سے قبل دونوں جماعتیں طویل عرصہ تک مخاصمت کا شکار رہی ہیں۔ مفاہمتی معاہدے کے بعد مخلوط فلسطینی حکومت کے قیام کے علاوہ نئے پارلیمانی انتخابات بھی کرائے جائیںگے۔