.

حمص: باغیوں کا اپنے اہم مرکز سے انخلا شروع

صدارتی انتخاب سے قبل بشارالاسد کے حق میں بڑی کامیابی ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شام میں باغیوں کے اہم مرکز حمص سے باغیوں کے انخلاء کیلیے بدھ کے روز بسیں پہنچ گئی ہیں۔ متعدد بسیں زیر محاصرہ قدیمی ضلعے میں داخل ہو گئی ہیں تاکہ جنگ زدہ افراد کو نکالنے میں مدد دے سکیں۔

حمص سے ایک ہزار باغیوں کا انخلاء بشارالاسد کے ساتھ ہونے والے پیچیدہ معاہدے کا حصہ ہے۔ دوسری جانب بشارالاسد کی فوج نے باغیوں کے اس علاقے کا محاصرہ نرم کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ اس معاہدے کے نتیجے میں باغ دو شیعہ قصبوں کے محاصرے میں نرمی کریں گے۔

اس عمل کے مکمل ہونے سے حمص شہر کے قلب میں باغیوں کے اثرات سے یہ علاقہ عملا صاف ہو جائے گا۔ واضح رہے اس علاقے کو انقلاب کا دارالحکومت کہا جاتا تھا۔ اسے متوقع صدارتی انتخاب سے پہلے بشارالاسد کی اہم فوجی کامیابی سے تعبیر کیا جائےگا۔

برطانیہ میں قائم انسانی حقوق کی آبزر ویٹری کے ڈائریکٹر رامی عبدالرحمان کا کہنا ہے کہ ''باغیوں کے حمص چھوڑنے کی توقع ہے، تاہم باغیوں کا اس علاقے سے انخلا مرحلہ وار ہو گا۔ '' شمالی شام کے علاقے نوبی اور الزہرہ میں انسانی بنیادوں پر مدد کی فراہمی بھی شروع ہو جائےگی ۔

واضح رہے چوتھے سال میں داخل ہو جانے سے شامی خانہ جنگی کے دوران اب تک ایک لاکھ پچاس ہزار لوگ مارے گئے ہیں۔ یومیہ 200 سے زائد لوگ مارے جا رہے ہیں۔ اس کے باوجود بشارالاسد صدارتی امیدوار کے طور پر سامنے ہیں۔