.

صدارتی انتخاب: شامی اداکارائیں مہم کا حصہ بن گئیں

نامور لوگ ووٹ کی شرح بہتر بنانے میں کردار ادا کریں گے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

بحران زدہ ملک میں انتخابات کی طرف عوام کو متوجہ کرنے شامی حکومت نے نامور شخصیات کو بروئے کار لانے کا فیصلہ کیا ہے۔ تاکہ ووٹ ڈالنے کی شرح میں بہتری لائی جا سکے۔ شام میں تین جون کو صدارتی انتخاب متوقع ہیں۔

حکومت کے حامی میڈیا سے متعلق ادروں اور سوشل میڈیا پر ایسی فوٹیج سامنے لائی جارہی ہے، جس میں نامور اداکارائیں، گلو کارائیں اور کھلاڑی دکھائے جا رہے ہیں۔ یہ ہر دلعزیز شخصیات لوگوں کو ووٹ کی اہمیت سے آگاہ کررہی ہیں۔ ایک ویڈیو میں کہا گیا ہے ''آپ کا ووٹ آپ کا تحفظ، آپ کا ووٹ آپ کی آزادی۔''

مشہور چہرے صدارتی ووٹ کے حق میں مہم چلاتے نظر آرہے ہیں۔ انہی میں سے نامور فلمی اداکار درائد لاحم ، سولاف فواخرجی اور سلمہ المسری کے علاوہ شادی اسود بھی اس مہم میں سرگرم ہیں۔

ایک کلپ میں فواخرجی کا کہنا ہے'' ہم ہیں وہ لوگ ہیں جو ملک اور اس کی آزادی و حاکمیت کے محافظ ہیں، ہمیں ضرور ووٹ استعمال کرنا ہے، یہ ہمارا فرض ہے۔'' لاحم نے اسی فوٹیج میں کہا '' صدارتی منصب کا فیصلہ پہلے ریفرنڈم سے ہوتا رہا اب الیکشن سے ہو گا، اس انتخاب سے ملک میں جمہوریت آئے گی۔

واضح رہے ایک شامی عدالت کے مطابق بشارالاسد سمیت تین صدارتی امیدواروں کے کا غذات نامزدگی قبول کر لیے گئے ہیں۔ تین جون کو متوقع صدارتی انتخاب میں بشارالاسد کے مقابل امیدواروں میں سے کوئی بھی کسی بڑے چیلنج کے طور پر موجود نہیں ہیں۔

تاہم سب سے اہم سوال ڈیڑ لاکھ قبروں سے نئی صدارتی مدت کو برآمد کرنا اور چھ ملین شہریوں کے ملک سے باہر پناہ گزینوں کے کیمپوں میں ہوتے ہوئے ان کا ووٹ حاصل کرنا ہو گا۔ کہ حکومت ان ووٹرز کا ووٹ کیسے یقینی بنائے گی۔