.

یمن: امریکی سفارتی سرگرمیاں معطل

سفارتی آپریشنز یورپی مفادات پر حملوں کے باعث معطل کیے: جین پاسکی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکا نے یمن میں اپنی سفارتی سرگرمیاں عارضی طور پر معطل کر دی ہیں۔ امریکی دفتر خارجہ نے یہ فیصلہ ایک فرانسیسی سکیورٹی گارڈ کی ہلاکت کے واقعے کے دو دن بعد کیا ہے۔ خیال رہے فرانس سے تعلق رکھنے والا سکیورٹی گارڈ یورپی یونین کے ساتھ یمنی دارالحکومت صنعا میں تعینات تھا۔

امریکی دفتر خارجہ کی ترجمان جین پاسکی نے اس بارے میں کہا ہے کہ '' یمن میں یورپی مفادات کے خلاف حالیہ کارروائیوں کی وجہ سے اپنے سفارتی آپریشنز عارضی طور پر بند کر دیے ہیں۔'' ترجمان کے مطابق اس دوران سکیورٹی کی صورت حال کا یومیہ بنیادوں پر جائزہ لیا جائے گا۔''

جین پاسکی کے مطابق مغربی مفادات پر ہونے والے حالیہ حملوں سے پہلے ہمیں اطلاعات ملیں تو ہم نے متعلقہ حلقوں کو پیشگی اقدامات کرے کیلیے ہدایات بھجوا دی تھیں۔'' انہوں نے کہا '' امریکا یمن میں سکیورٹی کے معاملات کی بہتری کیلیے ہر ممکن مدد کرنے کا عزم رکھتا ہے۔ ''

دوسری جانب یمنی سکیورٹی فورسز نے ایک نمایاں اسلام پسند جنگجوکو ہلاک کر دیا ہے۔ اس جنگجو کو یورپی مفادات پر حملوں کا ماسٹر مائیںڈ سمجھا جاتا تھا۔ یمنی سکیورٹی فوسرز نے القاعدہ کے پانچ عسکریت پسندوں کو حراست میں بھی لے لیا ہے۔