.

مصر: صدارتی انتخاب کیلیے تارکین وطن کی پولنگ شروع

تارکین 18 مئی تک ووٹ ڈالیں گے، عام شہری دس دن بعد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصر میں گزشتہ سال جولائی میں پہلے منتخب صدر محمد مرسی کی برطرفی کو دس ماہ گذرنے کے بعد صدارتی انتخابات کیلیے ووٹنگ کا پہلا مرحلہ آج شروع ہو گیا ہے۔ پہلے مرحلے میں دوسرے ملکوں میں موجود مصری تارکین وطن ووٹ کا حق استعمل کررہے ہیں.

اس سلسلے میں دنیا کے مختلف ملکوں میں قائم مصر کے سفارتی مشنوں میں مجموعی طور پر 140 پولنگ سٹیشن بنائے گئے ہیں۔ مصری الیکشن کمیٹی نے بیرون ملک اپنے شہریوں سے اپنے ووٹ کا حق استعمال کرنے کی اپیل کی ہے۔

مصری تارکین وطن کیلیے قائم کیے گئے ان پولنگ سٹیشنوں میں چھ لاکھ مصری ووٹ ڈال سکیں گے۔ جبکہ بیرون ملک مصریوں کی کل تعاد آٹھ ملین کے قریب ہے۔ ان میں سے زیادہ تر مصری سعودی عرب میں مقیم ہیں۔ واضح رہے مصر کے عام ووٹر آج سے دس دن بعد 26 اور 27 مئی کو اپنا حق رائے دہی استعمال کریں گے۔

صدارتی انتخاب میں سب سے اہم امیدوار محمد مرسی کو برطرف کرنے والے سابق فوجی سربراہ فیلڈ مارشل عبدالفتاح السیسی ہیں۔ ان کے مد مقابل بائیں بازو کے نظریات رکھنے والے حمدین صباحی ہیں جنہوں پہلے منتخب صدر مقابلے میں دو سال قبل تیسری پوزیشن لی تھی۔

صدارتی انتخاب اس روڈ میپ کے تحت کرایا جا رہا ہے جو صدر مرسی کی معزولی کے بعد جنرل عبدالفتاح السیسی کی زیر قیادت پیش کیا گیا تھا۔ توقع کی جا رہی ہے کہ السیسی اپنے مد مقابل سے کہیں زیادہ ووٹ حاصل کرنے میں کامیاب رہیں گے۔ مصری تارکین وطن کا ووٹ ڈالنے کا عمل 18 مئی تک جاری رہے گا۔ مبصرین السیسی کی جیت کی صورت میں جمال عبدالناصر کا دور واپس آتا دیکھ رہے ہیں۔