.

شام: ایران کے افغانوں کو جنگ میں جھونکنے کا انکشاف

بدلے میں ایران رہائشی پرمٹ اور 500 ڈالر ماہانہ پیش کرتا ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایران کے حوالے سے انکشاف سامنے آیا ہے کہ افغان مہاجرین کو شام میں لڑنے کیلیے بھرتی کیا جا رہا ہے۔ ان بھرتی ہونے والے افغانیوں کو ایران میں رہائش کیلیے پرمٹ دیے جانے کے علاوہ 500 ڈالر ماہانہ پیش کیے جاتے ہیں۔ یہ انکشاف ممتاز روز نامے ''وال سٹریٹ جرنل'' نے اپنی تازہ اشاعت میں کیا ہے۔

افغان اور مغربی ممالک کے ذمہ داروں کے حوالے سے اخبار نے رپورٹ کیا ہے کہ '' ایران کے مذہبی حوالے سے اہم ترین مرکز قم میں مقیم ایک افغانی عالم آیت اللہ کابلی کے دفتر نے بھی ان بھرتیوں کی تصدیق کی ہے۔ ''

ایران میں پناہ گزینوں کے معاملات دیکھنے والے ادارے ''آئی آر جی سی' 'کے ایک رکن نے بھی افغان مہاجرین کو شام کیلیے بھرتی کرنے کی تصدیق کی ہے۔ واضح رہے پناہ گزینوں کیلیے کام کرنے والے اس ایرانی ادارے کے حوالے سے آیت اللہ کابلی کے دفتر کے ایڈمنسٹریٹر کا کہنا ہے ''اس ادارے کا مہاجر نوجوانوں کو شام جا کر لڑنے کیلیے قائل کرنے میں کردار ہے۔''

ایڈمنسٹریٹر نے یہ بھی تصدیق کی ہے کہ '' ایسے مہاجرین جو شام میں لڑنے کو تیار ہو جائیں انہیں تنخواہ سے لیکر رہائش اور بچوں کی تعلیم تک ہر سہولت بہم پہنچائی جاتی ہے۔ '' اخبار نے مغربی ذمہ دار کے حوالے اپنی رپورٹ میں شامل کیا ہے کہ '' ایران کو افغانیوں کی صورت میں ایسے غریب جنگجو دستیاب ہو جاتے ہیں جو بشار رجیم کی طرف سے لڑائی میں خط اول پر حصہ لینے کو بھی تیار ہو جاتے ہیں۔''

افغان مہاجرین کے اس استعمال کی وجہ سے شام میں لڑنے والے ایرانی محافظین اور حزب اللہ کو کم ہلاکتوں کا سامنا ہوتا ہے۔ واضح رہے جمعرات کے روز ہی افغان شہریوں کی شام میں ہلاکت کی خبری بھی سامنے آئی ہیں۔