شامی اپوزیشن کے وزیر دفاع اسعد مصطفی مستعفی

"ملکی تباہی کے بارے میں جھوٹی گواہی نہیں دے سکتا"

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

شامی اپوزیشن کی جلاوطن حکومت میں شامل قائمقام وزیر دفاع اسعد مصطفی یہ کہتے ہوئے اپنے عہدے سے مستعفی ہو گئے ہیں کہ "وہ شام کی تباہی کے جھوٹے گواہ نہیں بننا چاہتے۔ شامی حکومت اپنے ہی شہریوں پر مظالم ڈھا کر تاریخ کا مجرم ترین ادارہ بن چکی ہے۔" انہوں نے کہا کہ وہ "جیش الحر اور دوسرے ناموں سے باغی گروپوں کی تشکیل پر مزید پردہ پوشی نہیں کر سکتے۔"

اسعد مصطفی کے استعفی سے شامی اپوزیشن کی صفوں میں اختلافات کھل کر سامنے آ گئے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ ان کے پاس بشار الاسد کے خلاف لڑنے والے انقلابیوں کے مطالبات فوری طور پر پورا کرنے کے وسائل موجود نہیں۔ ان کی تکمیل کے تمام امکانات دم توڑ چکے ہیں۔

انہوں نے ملک میں جاری بحران کے باعث تمام فریقوں کو خبردار کیا کہ اگر انہوں نے اس موقع پر کوئی تاریخی غلطی کی تو اس کی مکمل ذمہ داری ان پر عائد ہو گی۔ بقول اسعد مصطفی بہت سے لوگ اس غلطی کا ارتکاب کر چکے ہیں جس کے باعث شام کا بحران گہرا ہوا۔

مستفعی وزیر دفاع نے شامی عوام کے دوستوں اور بھائیوں سے اپیل کی کہ وہ بچا کھچا ملک سنبھالنے میں ان کی بھرپور مدد کریں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں