سعودی عرب میں ٹریفک سگنل توڑنا 'سنگین جرم' قرار

نئے قانون پر آج [ہفتہ] سے عمل درآمد کیا جائے گا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

وزیر داخلہ شہزادہ محمد بن نائف کی جانب سے حال ہی میں منظور کردہ نیا ٹریفک قانون پر ہفتے کے روز سے سعودی عرب میں عمل شروع کیا جا رہا ہے۔ اس قانون کی رو سے لال بتی کی خلاف ورزی سنگین اور ناقابل معافی جرم قرار دیا گیا ہے۔

القصیم پولیس کے ترجمان کرنل فہد العبدان نے میڈیا کو بتایا کہ وزیر داخلہ کے حکم پر نئے قانون کا نفاذ چوبیس مئی بروز ہفتہ کے روز سے ہو رہا ہے۔ اس قانون کی رو سے ٹریفک قوانین کی خلاف ورزی کرتے ہوئے سرخ اشارہ توڑنے والے شخص کو جیل بھجوایا جائے گا۔

انہوں نے کہا کہ اشارہ توڑنے کے مرتکب شخص کی گرفتاری اس وقت عمل میں لائی جائے گی جب اس کی وجہ سے کسی شخص کی جان چلی جاتی ہے، ٹریفک حادثے میں دوسرے کسی شخص کا کوئی عضو ٹوٹ جاتا ہے یا کوئی شخص اتنا زخمی ہوتا ہے کہ اس کی صحت یابی میں کم سے کم پندرہ دن لگ سکتے ہیں تو اشارہ توڑنے اور حادثے کا موجب بننے والے کو جیل بھیجا جائے گا۔

نشے کی حالت میں ڈرائیونگ اور ون وے کی خلاف ورزی پر حادثے کی صورت میں بھی خلاف ورزی کے مرتکب کو یہی سزا دی جا سکے گی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں