فیفا کے صدر سیپ بلیٹر کا فلسطینی علاقے کا دورہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

فٹ بال کی عالمی فیڈریشن تنظیم (فیفا) کے صدر سیپ بلیٹر آج سوموار کو فلسطینی علاقوں کا دورہ کررہے ہیں۔اس کا مقصد اسرائیل پر مغربی کنارے اور غزہ کی پٹی سے تعلق رکھنے والے فلسطینی کھلاڑیوں کو آزادانہ نقل وحرکت کی اجازت دینے کے لیے دباؤ ڈالنا ہے۔

فلسطین کی قومی فٹ بال ٹیم کے کھلاڑی غرب اردن اور غزہ کی پٹی سے تعلق رکھتے ہیں۔اسرائیل کی جانب سے فلسطینیوں کی نقل وحرکت پر عاید پابندیوں کی وجہ سے وہ آزادانہ ایک سے دوسرے علاقے میں نہیں جاسکتے ہیں۔

فیفا کے صدر پہلے مغربی کنارے کے شہر رام اللہ جائیں گے جہاں وہ فلسطینی صدر محمود عباس اور فلسطینی فٹ بال ایسوسی ایشن کے صدر جبریل رجوب سے ملاقات کریں گے۔ سیپ بلیٹر نے گذشتہ سال بھی مغربی کنارے کا دورہ کیا تھا اور اس موقع پر فلسطین کی قومی ٹیم کی مدد کا وعدہ کیا تھا۔

جبریل رجوب نے حال ہی میں اعلان کیا ہے کہ وہ جون میں ہونے والی فیفا کی کانگریس میں اسرائیل پر پابندیاں عاید کرنے کا مطالبہ کریں گے۔انھوں نے یہ اعلان ایک فلسطینی فٹ بالر کی گرفتاری اور دو کھلاڑیوں پر اسرائیلی سکیورٹی فورسز کی فائرنگ کے بعد کیا تھا۔

سیپ بلیٹر ان دنوں مشرق وسطیٰ کے دورے پر ہیں۔وہ اسرائیل اور اردن بھی جائیں گے۔وہ ایسے وقت میں یہ دورہ کررہے ہیں جب رومن کیتھولک کے روحانی پیشوا پوپ فرانسیس بھی ہفتے کے روز سے مقدس سرزمین کا دورہ کررہے ہیں اور انھوں نے اردنی ،فلسطینی اور اسرائیلی سربراہان ریاست سے ملاقاتیں کی ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں