حلب: شامی باغیوں کا سرنگ میں دھماکا، 40 فوجی ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

شام کے شمالی شہر حلب میں اسلامی باغی جنگجوؤں نے اسدی فوج کے زیر استعمال ایک سرنگ میں دھماکا کیا ہے جس کے نتیجے میں کم سے کم چالیس فوجی اور اسد نواز ملیشیا کے جنگجو ہلاک ہوگئے ہیں۔

برطانیہ میں قائم شامی آبزرویٹری برائے انسانی حقوق نے ہفتے کے روز اس واقعہ کی تصدیق کی ہے اور کہا ہے کہ اسلامی باغیوں نے شہر کے قدیم حصے میں واقع الزہراوی مارکیٹ میں سرنگ کو دھماکے سے اڑایا ہے۔

صدر بشار الاسد کی وفادار فوج کے خلاف جنگ لڑنے والے شامی باغیوں کے اتحاد محاذ اسلامی نے اس حملے کی ذمے داری قبول کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔ اس نے اپنے ٹویٹر اکاؤنٹ پر ایک ویڈیو کا لنک پوسٹ کیا ہے۔ اس میں ایک زوردار دھماکا ہوتے ہوئے دکھایا گیا ہے جس کے نتیجے میں ملبے سے گرد اور دھواں بلند ہو رہا ہے۔

آبزرویٹری کے مطابق دھماکے کے بعد شامی فوج اور باغیوں کے درمیان جھڑپ شروع ہو گئی تھی جس میں ایک باغی مارا گیا ہے۔ واضح رہے کہ محاذ اسلامی نے حالیہ ہفتوں کے دوران متعدد مرتبہ فوجیوں پر حملوں کے لیے سرنگوں کے ذریعے دھماکے کیے ہیں۔

حلب کے تاریخی قدیم حصے میں شامی فوج اور باغی جنگجوؤں کے درمیان کم وبیش روزانہ کی بنیاد پر جھڑپیں ہورہی ہیں اور فوج نے جگہ جگہ پوزیشنیں سنبھال رکھی ہیں۔حلب میں جولائی 2012ء سے اسدی فوج اور باغیوں کے خلاف شدید لڑائی ہو رہی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں