.

فلسطینی مخلوط حکومت نے حلف اٹھا لیا

مسئلہ فلسطین کو نقصان پہنچانے والی خلیج ختم ہو گئی: محمود عباس

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

فلسطینی اتھارٹی کے صدر محمود عباس نے مخلوط فلسطینی حکومت کے حلف کی تقریب کے بعد کہا ہے کہ متحدہ حکومت سے فلسطینی کاز کو نقصان پہنچانے والی خلیج اب ختم ہو گئی ہے۔ اسرائیل سے غزہ سے تعلق رکھنے والے وزراء کو حلف برداری میں شرکت کے لئے مغربی کنارا آنے کی اجازت نہیں دی.

صدر محمد عباس رام اللہ میں اپنے ہیڈ کوارٹرز میں تقریب حلف برداری کے بعد بات کر رہے تھے۔ دوسری جانب غزہ میں حماس کے ترجمان سامی ابو زھری نے قومی حکومت کی تشکیل کی تحسین کی ہے ۔

حماس کے ترجمان کا کہنا تھا ''ہم تمام فلسطینی عوام کی نمائندہ متحدہ حکومت کا خیر مقدم کرتے ہیں۔" واضح رہے مخلوط حکومت 17 وزراء پر مشتمل ہے۔ تمام وزراء ٹیکنو کریٹ یا غیر جانبدار شخصیات پر مشتمل ہے۔

حکومت کی قیادت وزیر اعظم رامی حمداللہ کر رہے ہیں۔ دوسری جانب محمود عباس نے کہا ہے کہ مخلوط حکومت اسرائیل کو تسلیم کرنے کی پالیسی کو جاری رکھے گی ۔ اگرچہ اسلامی گروپ نے اسرائیل کو تسلیم کر کے اپنی پالیسی تبدیل کرنے سے انکار کر دیا ہے۔

صدر محمود عباس نے جمعرات کے روز ہی رامی حمداللہ کو مخلوط حکومت کا وزیر اعظم بننے کی دعوت دے دی تھی ، اسرائیلی وزیر اعظم نے عالمی برادری کو خبر دار کیا ہے کہ فلسطین کی مشترکہ حکومت کو تسلیم نہ کیا جائے۔