.

ابوظہبی: خواتین کے لیے خصوصی ساحلی گوشہ تیار

گیارہ سو خواتین کی تیراکی کی گنجائش، 5000 کی تفریح گاہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ابو ظہبی میں صرف خواتین کے لیے مختص کیے سمندری ساحل پر خواتین کی آمد و رفت اور سرگرمیاں باقاعدہ طور پر آج بروز جمعرات سے شروع ہو رہی ہیں۔ سینکڑوں خواتین ایک عرصے سے اس دن کا انتظار کر رہی تھیں۔

ابوظہبی کی میونسپلٹی نے اس امر کا اعلان کرتے ہوئے بتایا ہے کہ خواتین کے لیے مخصوص کیے گئے اس ساحلی گوشے پر ایک وقت میں ایک ہزار ایک سو خواتین اور بچوں کے تیرنے کی گنجائش ہو گی۔ جبکہ پانچ ہزار خواتین سیرو تفریح کی غرض اس خصوصی گوشے پر آ سکیں گی۔

میونسپلٹی کے ساحلی شعبے کے سربراہ خلاف النکاس نے بتایا ہے کہ ''خواتین کے لیے بنائے گئے اس گوشے پر عالمی معیار کی سہولیات فراہم کی گئی ہیں۔ اس ساحل پر کیبن، سنیکس شاپس، سینما گھر اور بچوں کے لیے کھیل کے میدان کے علاوہ ورزش کے بھی مواقع ہوں گے۔''

ماہر غوطہ خور خواتین محافظ کے طور پر تعینات ہوں گی تاکہ کسی ہنگامی ضرورت کے لیے ہمہ وقت موجود ہوں۔ اس علاقے میں کیمرے استعمال کرنے کی اجازت نہ ہو گی۔ بچوں کے داخلے کیلیے عمر کی حد چھ سال سے کم ہو گی۔

میونسپلٹی کی ذمہ دار کے مطابق ''ساحلی گوشے کے لیے خصوصی حفاظتی باڑ کا بھی اہتمام کیا گیا ہے، اس کی وجہ سے غیر متعلقہ افراد کی نظروں سے بھی محفوظ بنا دیا گیا ہے۔ ''

ساحل پر آنے جانے کے اوقات کے حوالے سے انہوں نے بتایا '' صبح دس سے رات دس بجے تک خواتین اور بچوں کو آنے جانے کی اجازت ہو گی ، البتہ تیراکی غروب آفتاب کے بعد نہیں دی جائے گی۔

23 سالہ میرا التاو نے اس خبر پر خوشی کا اظہار کرتے ہوئے کہا ''پچھلے برسوں میں نے اپنی سہیلیوں کے ساتھ دوبئی کے پورے ساحل کے ساتھ سفر کیا کہ وقت صرف ایک ساحلی کلب تھا جس میں خواتین بھی جا سکتی تھیں اب یہ سہولت ہمیں گھر کے قریب مل گئی ہے۔"