.

بعقوبہ میں پولیس اسٹیشن پر حملہ، 44 ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراق میں قومی سیکیورٹی سے متعلق ذرائع نے بتایا ہے کہ بغداد کے شمال مشرقی شہر بعقوبہ میں پولیس چوکی پر حملے میں 44 افراد ہلاک ہو گئے۔

ادھر نوری المالکی کی وفادار فوج نے دارلحکومت سے ساٹھ کلومیٹر کے فاصلے پر واقع بعقوبہ شہر پر مسلح جنگجووں کے حملے کو پسپا کرنے کا دعوی کیا ہے۔

دجلہ آپریشن کے سربراہ لیفٹیننٹ جنرل عبدالامیر محمد رضا الزیدی نے 'اے ایف پی' کو بتایا کہ مسلح افراد نے خودکار ہتھیاروں سے بعقوبہ پر حملہ کیا، جسے سیکیورٹی فورس نے پسپا کر دیا ہے۔

ادھر سرکاری فوج کے لیفٹیننٹ کرنل نے تصدیق کی ہے مسلح جنگجووں نے بعقوبہ کے مرکز اور مغربی علاقے میں الکاطون، المفرق اور المعلمین کالونیوں پر کئی گھنٹے قبضہ کیے رکھا، تاہم اس کے بعد عراقی فوج جنگجووں سے ان کالونیوں کا قبضہ چھڑانے میں کامیاب ہو گئی۔

عراق کے مختلف علاقوں میں جنگجووں کی تقریبا ایک ہفتے سے جاری مسلح کارروائیوں کے بعد سے ابتک دیالی گورنری کے شہر بعقوبہ پر یہ پہلا حملہ تھا۔

دولت اسلامی عراق و شام 'داعش' کے مسلح جنگجووں نے بغداد سے 360 کلومیٹر شمال میں نینوی گورنری کے صدر مقام موصل سمیت کے بڑے علاقوں کا کنڑول حاصل کر لیا ہے۔ قبضے میں لئے جانے والے علاقوں میں صدام حسین کا آبائی شہر تکریت [بغداد سے 160 کلومیٹر شمال] اور صلاح الدین گورنری کا صدر مقام شامل ہیں۔