.

عراق میں نوری المالکی کو اخوان المسلمون کی حمایت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اخوان المسلمون نے اپنے حالیہ بیان میں عراقی وزیر اعظم نوری المالکی کی مذمت سے اجتناب برتتے ہوئے دجلہ و فرات کی سر زمین میں پیدا ہونے والی صورت حال پر گو مگو موقف اختیار کیا ہے جس سے یہ واضح تاثر ملتا ہے کہ تنظیم موجودہ حکومت کے خلاف بپا ہونے والے انقلاب کو مسترد کرتی ہے۔

اخوان المسلمون کے نام سے جاری ہونے والے بیان میں تنظیم نے حالیہ بحران کی مذمت کی۔ بیان میں اپیل کی گئی ہے کہ عراقی سیاست کو مذہب اور فرقہ وارانہ معاملات سے دور رکھا جائے۔ "مذہبی دعووں کو استعمال کرتے ہوئے فرقہ وارانہ فتنے کو پروان چڑھنے سے روکا جائے کیونکہ اس کے تباہ کن اثرات مرتب ہو سکتے ہیں۔"

یاد رہے کہ الاخوان المسلمین ایران میں خمینی انقلاب کے وقت سے ایرانی حکومت کے حلیف چلے آ رہے ہیں۔