.

داعش کی مسلمانوں کو 'اسلامی ریاست' کی طرف ھجرت کی دعوت

اسلامی ریاست کی تعمیر کے لیے عالم اسلام سے مدد کی اپیل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراق اور شام کے کئی شہروں پر فتح کا پرچم لہرانے کے بعد شدت پسند تنظیم داعش کے امیر ابو بکر البغدادی نے دنیا بھر کے مسلمانوں سے اپیل کی ہے کہ وہ نئی اسلامی ریاست کی تعمیر میں اپنا حصہ ڈالیں۔ انہوں نے اپنے پہلے ویڈیو پیغام میں جہاں مسلمانان عالم کو نئی 'اسلامی ریاست' کی طرف ھجرت کی دعوت دی وہیں روم کی فتح کی بھی پیش گوئی ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق "داعش" کے سربراہ ابو بکر القرشی الحسینی البغدادی نے ایک ویڈیو پیغام میں مسلمانوں اور "مجاھدین" کو مخاطب کرتے ہوئے ان پر طاغوتی قوتوں کے خلاف جہاد میں حصہ لینے پر زور دیا۔ البغدادی نے مسلمانوں سے دین کی نصرت اور غلبہ اسلام کے لیے جان ومال سمیت ہر قسم کی قربانی دینے دینے کی بھی اپیل کی۔

البغدادی نے مسلمان ممالک کی افواج پر زور دیا کہ وہ دنیاوی مقاصد کے بجائے دنیا بھر کے مظلوم مسلمانوں کی مدد کے لیے جنگ کی تیاری کریں اور مسلمانوں کو ان کے سلب شدہ حقوق دلانے کے لیے "داعش" کی جدوجہد کا ساتھ دیں۔

"حق" نیوز ایجنسی کے مطابق البغدادی کا مزید کہنا ہے کہ "وہ وقت زیادہ دور نہیں جب مسلمان عزت کے ساتھ سر اٹھا کر چلیں گے"۔ انہوں نے کہا کہ آج ہم ایک نئے عہد کا آغاز کر رہے ہیں مسلمانوں کو چاہیے کہ وہ اس عظیم مقصد کے لیے متحد ہو جائیں۔

ابو بکر البغدادی نے اسلامی خلافت کے احیاء اور اسلامی اصولوں پر مبنی ریاست کے قیام کو پوری مسلم دنیا کے لیے "خوشخبری" قرار دیا۔ انہوں نے کہا کہ ہم ایک ایسی خلافت کی بناء ڈال رہے ہیں جو ہندوستان سے قوقاز تک وسیع ہو گی جس میں عرب، مصری، فرانسیسی،جرمن اور آسٹریلوی ایک پرچم تلے جمع ہوں گے"۔

ابوبکر البغدادی نے نئی "اسلامی ریاست" کی تعمیر میں حصہ لینے کے لیے علماء، عسکری ماہرین، ڈاکٹروں، معماروں اور دیگر پیشوں سے وابستہ ماہرین کو نئی مملکت کی طرف ھجرت کی دعوت دی۔ انہوں نے کہا کہ مسلمان طاقت ور ہیں۔ عالم اسلام کی مسلح افواج کو اپنے خلاف دشمن کے اکٹھ سے خوف زدہ نہیں ہونا چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ مسلمان جلد ایک مرتبہ پھر روم فتح کریں گے اور پوری زمین اللہ کے حکم سے مسلمانوں کے زیر نگیں ہو گی۔