مصر: مرشد عام اخوان المسلمون کو عمر قید کی سزا

36 دیگر رہنماوں کو بھی عمر قید اور دس کو سزائے موت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

مصری عدالت نے اخوان المسلمون کے مرشد عام محمد بدیع کو عمر قید کی سزا سنائی ہے۔ اس سے پہلے انہیں دو مختلف مقدمات میں سزائے موت بھی سنائی جا چکی ہے۔

محمد بدیع جن کی جماعت اخوان المسلمون کو پچھلے سال دسمبر میں مصری حکومت کی طرف سے دہشت گرد قرار دے دیا گیا گیا تھا پچھلے سال ہی ماہ اگست میں اپنے ہزاروں ساتھیوں سمیت گرفتار ہوئے تھے۔

مرشد عام محمد بدیع کی گرفتاری سے محض دوروز قبل ان کے جوانسال بیٹے کو سکیورٹی فورسز کی طرف سے ایک بڑے کریک ڈاون میں ہلاک کر دیا گیا تھا۔

سکیورٹی فورسز نے یہ کریک ڈاون معزول صدر محمد مرسی کی برطرفی کے خلاف مسجد رابعہ العدوایہ کے باہر دھرنا دینے والے ہزاروں کارکنوں کا دھرنا ختم کرنے کے لیے کیا تھا۔ اس دھرنے کے دوران سرکاری ذرائع کے مطابق ایک ہزار سے زائد افراد ہلاک ہوئے تھے۔

مرشد عام کو اخوان مسلمون کے دیگر 36 رہنماوں سمیت یہ سزا سنائی گئی ہے۔ جبکہ اخوان کے دس افراد کو سزائے موت بھی سنائی گئی ہے۔ واضح رہے اب تک اخوان کے سینکڑوں کارکنوں کو سزائے موت سنائی جا چکی ہے۔ اخوان المسلمون نے صرف دو روز قبل مرسی حکومت کی برطرفی کو ایک سال ہونے پر ملک بھر میں احتجاج کی کال دی تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں