.

اسرائیل کے جنگی طیاروں کی غزہ پر وحشیانہ بمباری

پیر اور منگل کی درمیانی شب پچاس مقامات کو نشانہ بنایا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اسرائیلی فضائیہ کے بمبار طیاروں نے پیر اور منگل کی درمیانی شب کے دوران درجنوں بار غزہ کو بمباری کا نشانہ بنایا ہے۔ اس امر کا اظہار فلسطینی حکام نے منگل کی صبح کیا ہے۔

ان درجنوں تازہ فضائی حملوں کی اسرائیلی فوجی ترجمان نے بھی تصدیق کرتے ہوئے کہا ہے کہ نئے فضائی آپریشن کو ''محفوظ کنارہ'' کا نام دیا گیا ہے۔

اسرائیلی ترجمان کے مطابق کم از کم ان تازہ حملوں کے دوران غزہ میں پچاس مقامات کو اسرائیلی بمبار طیاروں نے نشانہ بنایا گیا ہے۔ فوجی ترجمان لیفٹیننٹ کرنل پیٹر لارنر نے عالمی خبر رساں ادارے کو بتایا'' عسکریت پسندوں کے چار گھروں پر بھی حملہ کیا گیا ہے۔

ترجمان نے وضاحت کرتے ہوئے کہا ایک رات کے دوران جن پچاس فلسطینی مقامات کو نشانہ بنایا گیا ان میں سے اکثر فضائی حملوں کا نشانہ بنے ہیں، جبکہ تین اہداف کو اسرائیل نے سمندر سے نشانہ بنایا گیا ہے۔ ترجمان کا مزید کہنا تھا آئندہ دنوں میں یہ کارروائیاں بڑھا دی جائیں گی۔

اسرائیل کے فوجی ترجمان نے کہا '' ہمارا ہدف حماس ہے اور ہم راکٹ حملوں کو روکنا چاہتے ہیں۔'' واضح رہے اسرائیلی فوج کا کہنا ہے کہ حالیہ ایک ہفتے کے دوران غزہ سے اسرائیل پر 300 راکٹ داغے گئے ہیں۔ ان میں سے 80 راکٹ کل پیر کے روز داغے گئے ہیں۔

اسرائیل کا تازہ بڑا حملہ پیر کے روز داغے گئے راکٹوں کا جواب ہے جو القسام بریگیڈ نے اسرائیلی فضائی حملے میں 9 فلسطینیوں کی شہادت کے بعد داغے تھے۔