پاکستان کی غزہ پر اسرائیلی حملوں کی مذمت

مغرب، غزہ پر اسرائیل کی وحشیانہ بربریت رکوائے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

پاکستان، اردن اور ایران نے اسرائیل سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ غزہ کی پٹی پر اپنی ہلاکت خیز بمباری کا سلسلہ فورا بند کرے۔

دفتر خارجہ اسلام آباد نے فلسطین میں اسرائیلی جارحیت کی مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان اسرائیلی فضائی حملوں کو روکنے کے لئے بین الاقوامی برادری کی کوششوں کی حمایت کرتا ہے۔

ترجمان دفتر تسنیم اسلم نے کہا کہ پاکستان کو غزہ میں ہونے والی اسرائیلی جارحیت میں انسانی جانوں کے ضیاع اور وہاں تشدد کے بڑھنے پر گہری تشویش ہے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان نے فلسطینی تحریک بالخصوص دو ریاستی حل جس کے ذریعے 1967 سے قبل کی سرحدوں کی بنیاد پر القدس شریف کو دارلحکومت رکھنے والی آزاد فلسطینی ریاست کا قیام ہو ، کی مستقل حمایت کی ہے۔

ادھر عمان دفتر خارجہ کے ترجمان محمد مومانی نے صورتحال پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ 'وحشیانہ' اسرائیلی بمباری غزہ سے کئے جانے والے راکٹ حملوں کا ردعمل بتائی جاتی ہے، جس میں ایک بھی اسرائیل ہلاک نہیں ہوا جبکہ غزہ پر اسرائیلی جارحیت میں ابتک 26 فلسطینی شہید ہو چکے ہیں.

محمد مومانی نے کہا کہ اسرائیل کی جارحانہ بربریت کے غزہ سمیت پوری خطے پر منفی اثرات پڑیں گے۔ "اسرائیلی اقدامات بین الاقوامی قوانین کی خلاف ورزی ہیں۔ ان سے علاقے میں قیام امن کی کوششوں کی راہ میں رکاوٹ پیدا ہوتی ہے۔"

یاد رہے اردن ان دو عرب ملکوں میں شامل ہے جنہوں نے فلسطینی علاقوں پر اسرائیلی قبضہ جائز تسلیم کرتے ہوئے 1994ء میں صہیونی ریاست سے امن معاہدہ کیا تھا۔

درایں اثناء ایرانی وزارت خارجہ نے بھی غزہ پر اسرائیلی فضائی حملوں کی مذمت کرتے ہوئے مغربی دنیا پر زور دیا ہے کہ وہ اسرائیل کو بڑی انسانی تباہی برپا کرنے سے روکے۔

تہران دفتر خارجہ کی ترجمان مرزیہ افخم نے ہفتہ وار بریفنگ میں بتایا کہ "حالیہ چند دنوں سے ہم بد قسمتی سے معصوم اور نہتے فلسطینیوں کے خلاف وحشیانہ اسرائیلی جارحیت دیکھ رہے ہیں۔"

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں