.

غزہ میں محصور زخمیوں کے لیے رفح کراسنگ کھل گئی

قاہرہ نے سیناء کے ہسپتالوں کو ہمہ وقت تیار رہنے کا حکم دیدیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

قاہرہ سے العربیہ کے نامہ نگار نے اپنے مراسلے میں بتایا ہے مصری حکام نے غزہ کو مصر سے ملانے والی رفح سرحدی راہداری کھولنے کا فیصلہ کیا ہے تاکہ جاری اسرائیلی جارحیت کے دوران زخمی ہونے والے فلسطینیوں کو علاج کی غرض سے مصر منتقل کیا جا سکے۔

مصری سرکاری خبر رساں ادارے مڈل ایسٹ نیوز ایجنسی "مینا" کے مطابق غزہ اور اسرائیل سے متصل مصری علاقے شمالی سیناء کے تمام ہسپتالوں کو تیار رہنے کا حکم دیا گیا ہے تاکہ وہاں فلسطینی شہریوں کا چوبیس گھنٹے علاج ممکن بنایا جا سکے۔

رفح کراسنگ عام طور پر بند رکھی جاتی ہے کیوںکہ مصری حکام کا کہنا ہے کہ کراسنگ کے کھلے رہنے کی وجہ سے سیناء کے علاقے میں سیکیورٹی کی صورتحال متاثر ہوتی ہے۔ مصری فوج سیناء کے علاقے میں اسلام پسند مسلح گروپوں کے خلاف سرگرم عمل ہے۔

یاد رہے رفح کراسنگ غزہ کا باہر کی دنیا سے واحد رابطہ ہے کیوںکہ اس کے علاوہ باقی تمام سرحدی راہداریاں اسرائیلی قبضے میں ہیں جبکہ اس کے علاوہ اسرائیلی بحریہ نے سمندری حدود میں بھی تین ناٹیکل میل کا پہرہ لگا رکھا ہے اور کسی فلسطینی کشتی کو اس پہرے سے باہر جانے کی اجازت نہیں ہے۔

میڈیکل ذرائع کی فراہم کردہ اطلاعات کے مطابق غزہ کے خلاف منگل کے روز سے شروع کئے جانے والے اسرائیل کے 'دفاعی کنارہ آپریشن' میں 11 خواتین اور 18 بچے سمیت 70 افراد شہید ہو چکے ہیں۔