شامی فوج اور حزب اللہ کے چالیس جنگجو ہلاک

القلمون میں ایک مرتبہ پھر گھمسان کی جنگ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

شام کے شہر حماہ میں باغیوں کی نمائندہ جیش الحر کے حملے میں سرکاری فوج اور لبنانی شیعہ ملیشیا حزب اللہ کے 40 جنگجو ہلاک ہو گئے ہیں۔ باغیوں نے حزب اللہ کے تین اہم کمانڈروں کو حراست میں بھی لیا ہے۔

دوسری جانب القلمون شہر میں باغیوں، سرکاری فوج، حزب اللہ اور النصرہ فرنٹ کے مابین گھمسان کی جنگ کی اطلاعات ہیں۔

حماہ میڈیا سینٹر کی جانب سے جاری ایک بیان میں بتایا گیا ہے کہ مورک اور طیبہ چیک پوسٹوں پر سرکاری فوج اور اسد نواز حزب اللہ کے ٹھکانوں پر جیش الحر نے تابڑ توڑ حملے کیے جس کے نتیجے میں انہیں بھاری جانی نقصان پہنچایا گیا ہے۔ سرکاری فوج اور حزب اللہ کے جنگجوؤں کو شامی فضائیہ کی بھی مدد حاصل تھی تاہم باغیوں نے جنگی طیاروں کی بمباری کا بھی بھرپور جواب دیا۔

ادھر لبنان کی سرحد سے متصل شہر القلمون میں کچھ عرصہ قبل باغیوں کے قبضے کے بعد سرکاری فوج، جیش الحر اور النصرہ فرنٹ کے درمیان ایک مرتبہ پھر لڑائی چھڑ گئی ہے۔ القلمون پر گذشتہ اپریل میں جیش الحر نے قبضہ کرتے ہوئے وہاں سے سرکاری فوج اور حزب اللہ کو نکال باہر کیا تھا۔ اطلاعات کے مطابق شہر کے ایک طرف حزب اللہ اور القاعدہ نواز النصرہ فرنٹ جبکہ دوسری جانب جیش الحر اور شامی فوج کے درمیان لڑائی جاری ہے۔

حزب اللہ کو شامی فضائیہ کی بھی بھرپور مدد حاصل ہے تاہم النصرہ نے مخالف جنگجوؤں کو زمینی پیش قدمی سے روک رکھا ہے۔ حزب اللہ کے ذرائع کے مطابق اس نے لبنانی سرحد سے متصل القلمون میں جرود عرسال کے مقام پر باغیوں کےاہم ٹھکانے پر قبضہ کر لیا ہے۔

باغیوں کا کہنا ہے کہ انہوں نے القلمون میں حزب اللہ کو بھاری جانی نقصان پہنچانے کے بعد کئی اہم چیک پوسٹوں اور قصبوں پر دوبارہ قضہ حاصل کر لیا ہے۔ باغیوں نے بتایا کہ القلمون میں حزب اللہ کا ایک اہم فیلڈ کمانڈر سمیت کئی جنگجو ہلاک ہو گئے ہیں۔

العربیہ ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق حزب اللہ نے القلمون میں لڑائی کے دوران اپنے دو اہم کمانڈروں کے لاپتا ہونے کا اعتراف کیا ہے۔ حزب اللہ کی جانب سے جاری ایک بیان میں بتایا گیا ہے کہ قلمون میں کفر تبنیت کے مقام پر بسام طباجہ باغیوں کے حملے میں مارا گیا۔

حزب اللہ کے ایک مقرب ذرائع کا کہنا ہے کہ القلمون میں اس کی لڑائی کا مقصد لبنان سے متصل سرحدی علاقے میں شامی باغیوں کے انفرا سٹرکچر کو تباہ کرنا ہے۔ اپوزیشن ذرائع کا کہنا ہے کہ انہوں نے شام اور لبنان کے درمیان عرسال، بریتال اور الجرود کے مقامات پر حزب اللہ کو شدید نقصان پہنچایا ہے اور انقلابی کارکن پیش قدمی کر رہے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں