مصر کا سیز فائر معاہدے پر نظر ثانی کرنے سے انکار

فرانس نے جنگ بندی کے لئے مکمل حمایت کا یقین دلا دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

مصری وزیر خارجہ سامح شکری نے کہا ہے کہ اسرائیل اور حماس کے درمیان جاری غزہ جنگ کو روکنے کے لئے پیش کئے جانے والے سیز فائر معاہدے پر قاہرہ نظر ثانی نہیں کرے گا۔ یاد رہے حماس جنگ بندی کی مصری پیشکش پہلے ہی مسترد کر چکی ہے۔

ہفتے کے روز قاہرہ میں فرانسیسی ہم منصب لوران فابیوس کے ہمراہ مشترکہ نیوز کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے مصری وزیر خارجہ نے کہا کہ یہ معاہدہ تمام فریقوں کی ضروریات پوری کرتا ہے اور ہم اسے پیش کرتے رہیں۔ اس معاہدے کے لئے ہمیں جلد متعلقہ فریقوں کی حمایت ملنے کی امید ہے۔

نیوز کانفرنس کے دوران فرانسیسی وزیر خارجہ نے غزہ میں فوری جنگ بندی کا مطالبہ کیا اور ایک بار پھر مصری پیشکش کے لئے اپنے ملک کی حمایت کا اظہار کیا۔

فابیوس نے یہ مطالبہ مصری صدر عبدالفتاح السیسی سے ملاقات کے بعد کیا۔ سیسی ان دنوں قاہرہ کے سیز فائر معاہدے کے لئے بین الاقوامی حمایت حاصل کرنے کی کوششوں میں مصروف ہیں۔

مصری سیز فائر کو گذشتہ منگل کو نافذ العمل ہونا تھا لیکن حماس کے انکار کے باعث نافذ نہ ہو سکا۔ اس معاہدے کی روشنی میں جنگ بندی کے بعد اسرائیل اور حماس کے درمیان بالواسطہ مذاکرات کا سلسلہ شروع کیا جانا تھا۔

تاہم حماس راکٹ باری روکنے سے پہلے اس بات پر مصر ہے کہ رفح کراسنگ کھولنے سے متعلق اس کے مطالبات پر بات کی جائے۔

فابیوس کا کہنا تھا کہ"جنگ بندی پہلی ترجیح ہے، تاہم یہ سیز فائر دیرپا ہونا چاہئے اور اس میں 'اسرائیل کی سلامتی' اور فلسطینیوں کے مطالبات کا خیال رکھا جانا چاہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں