البغدادی کی اہلیہ سجی الدلیمی کی تصویر جعلی نکلی

العربیہ ڈاٹ نیٹ نے البغدادی کی اہلیہ کی حقیقی فوٹیج نشر کر دی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
4 منٹس read

شام اور عراق کے متعدد علاقوں پر مشتمل 'اسلامی خلافت' کے قیام کی دعویدار تنظیم 'داعش' کے سربراہ اور بزعم خود خلیفہ ابوبکر البغدادی کی اہلیہ کی تصویر نے عالمی میڈیا تہلکہ مچا دیا تھا، جس کے بعد اسلامی خلافت کی خاتون اول کے چرچے ہونے لگے لیکن العربیہ ڈاٹ نیٹ نے البغدادی کی مبینہ اہلیہ کی اصلیت کا بھانڈہ پھوڑ دیا۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ نے البغدادی کی بیوی سجی حمید الدلیمی کی اصل تصاویر اور فوٹیج حاصل کر لی ہے۔ یہ فوٹیج مارچ میں شامی حکومت اور النصرہ فرنٹ کے درمیان خواتین قیدیون کے تبادلے کا معاہدہ کرانے میں ثالث کا کردار ادا کرنے والے ایک ایجنٹ ھادی العبدللہ نے دی ہے۔

العبدللہ کا کہنا ہے کہ جس خاتون کو داعش کے سربراہ کی اہلیہ قرار دیا گیا ہے وہ اسد رجیم کی حراست سے نکالی جانے والی شامی خواتین کے گروپ میں شامل تھی مگر وہ البغدادی کی اہلیہ نہیں اور نہ ہی اس کا نام الدلیمی ہے۔ عالمی نشریاتی اور اشاعتی اداروں سے سجی حمید الدلیمی کی شناخت میں غلطی ہوئی ہے۔

یاد رہے کہ 10 مارچ کو شامی حکومت اور القاعدہ کی ذیلی تنظیم "النصرہ فرنٹ" کے درمیان خواتین قیدیوں کے تبادلے کا ایک معاہدہ طے پایا تھا جس کے تحت شامی شہر معولا سے تعلق رکھنے والی 13 عیسائی راہبات کے بدلے میں دمشق نے باغیوں کی 150 خواتین کو رہا کیا تھا۔ رہائی پانے والی خواتین میں ایک کا نام سجی حمید الدلیمی بھی شامل تھی جو اپنی ہمیشرہ اور تین بچوں کے ہمراہ شامی حکومت کی تحویل میں تھی۔ الدلیمی عراق میں مارے جانے والے ایک سابق القاعدہ کمانڈر کی اہلیہ ہے جس سے اس کے تین بچے ہیں۔

حال ہی میں الدلیمی کے "داعش" کے خود ساختہ خلیفہ ابو بکر البغدادی سے رشتہ ازدواج میں منسلک ہونے کی خبروں کے بعد ایک خاتون کی تصویر بھی سامنے آئی تھی جسے مبینہ طور پر سجی الدلیمی قرار دیا گیا تھا، تاہم اب معلوم ہوا ہے کہ جش خاتون کو الدلیمی قرار دیا گیا ہے وہ شامی فوج کے قبضے سے رہائی پانے والی خواتین کے گروپ میں شامل تھی مگر اس کا نام الدلیمی نہیں ہے اورنہ ہی اس نے البغدادی سے نکاح کر رکھا ہے۔

قبدیوں کے تبادلے میں مدد کرنے والے ایجنٹ ھادی عبداللہ نے "العربیہ ڈاٹ نیٹ" سے گفتگو کے دوران خواتین کی ایک دوسرے کو حوالگی کے وقت تیار کردہ ویڈیو فوٹیج بھی دکھائی۔ ھادی نے بتایا کہ تین بچوں والی خاتون جو سجی الدلیمی کے نام سے جانی جاتی تھی نقاب میں تھی اور اسے النصرہ فرنٹ کے عناصر کار میں بچوں اور اس کی ہمشیرہ کے ہمراہ نامعلوم مقام کی طرف لے گئے تھے جبکہ جس خاتون کو الدلیمی قرار دیا گیا وہ دیگر شامی خواتین کے ہمراہ عرسال میں ہیں۔ نیز انہوں نے کہا کہ الدلیمی نے چہرے پر نقاب کر رکھا تھا اس لیے اس کی شناخت ممکن نہیں ہو سکی، جس خاتون کو الدلیمی قرار دیا گیا تھا اس کا تعلق شام سے ہے اسے بعد ازاں عرسال منتقل کر دیا گیا تھا۔

اس خاتون کا خود کہنا ہے کہ البغدادی کی اہلیہ کے طور پر مشتہر تصویر اسی کی ہے لیکن وہ سجی الدلیمی ہے اور نہ یہ اس کی تصویر ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں