اسرائیل، حماس کا 12 گھنٹے کے لئے جنگ بند کرنے کا اعلان

جان کيری پيرس ميں ہونے والے اجلاس ميں شرکت کريں گے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

اقوام متحدہ کی درخواست پر اسرائيل اور غزہ پٹی ميں سرگرم مزاحمت کار انسانی بنيادوں پر بارہ گھنٹوں کے ليے جنگ بندی پر رضامند ہو گئے ہيں۔ اس عارضی فائر بندی کا اطلاق ہفتے کی صبح سے شروع ہو رہا ہے۔

غزہ اور مقبوضہ بیت المقدس سے موصولہ اطلاعات کے مطابق اسرائيلی افواج ہفتہ چھبيس جولائی کو مقامی وقت کے مطابق صبح آٹھ بجے يا عالمی وقت کے مطابق صبح پانچ بجے سے غزہ پٹی ميں اپنی کارروائياں بارہ گھنٹوں کے ليے معطّل کر ديں گی۔ تاہم فوجی بيان ميں بتايا گيا ہے کہ اسرائيلی فوجی اہلکار اس دوران بھی جنگجوؤں کے زير استعمال سرنگوں کو ڈھونڈنے کا عمل جاری رکھيں گے۔ حماس کے ايک ترجمان کے بقول فلسطينيوں کی تمام دھڑے بھی جنگ بندی معاہدے پر عمل در آمد کريں گے۔

درايں اثناء غزہ ميں ديرپا جنگ بندی کے قيام کے ليے بھی سفارتی کوششيں جاری ہيں۔ ايک فرانسيسی سفارتی ذرائع کے مطابق ہفتے کو دارالحکومت پيرس ميں ايک اجلاس منعقد ہو رہا ہے، جس ميں ميزبان ملک کے علاوہ جرمنی، امريکا، برطانيہ اور اٹلی کے سفارت کاروں سميت يورپی يونين کے خارجہ امور کی سربراہ کيتھرين ايشٹن بھی شرکت کر رہی ہيں۔ اجلاس میں مسلح تنازعے کے حل کے ليے مصر کی ثالثی پر گفتگو کی جائے گی اور يہ کوشش کی جائے گی کہ فریقین کو فوری طور پر حملے روکنے پر راضی کیا جا سکے۔

قبل ازيں جمعہ کو اسرائيل نے امريکی وزير خارجہ جان کيری کی طرف سے پيش کردہ جنگ بندی کے ايک تازہ منصوبے کو مسترد کر ديا تھا۔ يہ فيصلہ گزشتہ روز ہی منعقد ہونے والے اسرائيلی سکيورٹی کابينہ کے اجلاس ميں کيا گيا تھا۔ تاہم ايک امريکی سفارت کار نے اس بارے ميں کہا ہے کہ جنگ بندی کے مجوزہ معاہدے کے مسودے پر چند اختلافات ہيں تاہم وہ پر اعتماد ہيں کہ بالآخر کسی سمجھوتے تک پہنچا جا سکے گا۔

ادھر غزہ پٹی ميں حماس کے جنگجوؤں کی جانب سے اسرائيل پر راکٹ داغے جانے اور اس کے جواب ميں اسرائيلی کارروائی گزشتہ روز بھی جاری رہی۔ غزہ کے اہلکاروں کے مطابق اسرائيلی فضائی حملوں ميں پانچ مزيد افراد ہلاک ہوئے، جس کے بعد پچھلے انيس دنوں کے دوران شہید ہونے والے فلسطينيوں کی تعداد 888 ہو گئی ہے، جن ميں بھاری اکثريت شہريوں کی ہے۔ اسرئيلی فوج کے مطابق جمعہ کے روز اس کے بھی مزيد تين فوجی مارے گئے، جس کے بعد فوجی ہلاکتوں کی تعداد 37 ہو گئی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں