.

غزہ میں غیر مشروط جنگ بندی کی جائے: سلامتی کونسل

حماس بھی مزید 24 گھنٹوں کے لیے جنگ بندی پر تیار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اقوام متحدہ کے موثر ترین ادارے سلامتی کونسل نے غزہ میں غیر مشروط اور انسانی بنیادوں پر فوری جنگ بندی کے لیے کہا ہے۔

یہ مطالبہ سلامتی کونسل کے ایک ہنگامی اجلاس کے بعد جاری کیے گئے بیان میں کیا گیا ہے۔ دریں اثناء امریکی صدر براک اوباما نے اسرائیلی وزیر اعظم بنجمن نیتن یاہو سے ایک مرتبہ پھر فون پر بات کر کے بھی اس ضروت پر زور دیا ہے کہ غزہ میں فوری، غیر مشروط اور انسانی بنیادوں پر جنگ بندی کر دی جائے۔

صدر اوباما نے مستقل بنیادوں پر اسرائیل اور حماس کے درمیان کشیدگی ختم کرانے کے لیے 2012 کے جنگ بندی معاہدے کی بنیاد پر آگے بڑھنے کے لیے کہا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ'' بالآخر اسرائیل اور حماس کے درمیان ایک دیرپا عمل کے لیے حل کی ضرورت ہے ۔ نیز دہشت گرد گروپوں کو لازما غیر مسلح کیا جانا چاہیے اور غزہ کو اسلحے سے پاک کیا جائے۔''

واضح رہے حماس نے بھی اگلے چوبیس گھنٹو٘ں کے لیے مزید جنگ بندی پر اتفاق کیا ہے جبکہ اسرائیل نے پہلے ہی بارہ گھنٹوں کے لیے جنگ بندی میں توسیع کی بات کی تھی۔ خیال رہے مزید چوبیس گھنٹوں کے لیے جنگ بندی کا آغاز دوپہر کے دو بجے سے ہو گا۔
حماس کے ترجمان سامی ابو زہری کا کہنا ہے '' یہ اعلان اسرائیل کی طرف سے اس اعلان کے بعد سامنے آیا ہے جو اسرائیل کی طرف سے کہا گیا تھا وہ غزہ میں زمینی حملے از سر نو شروع کر رہا ہے۔

اب تک اسرائیلی بمباری سے اب تک ایک ہزار پچاس سے زائد فلسطینی شہید ہو چکے ہیں جن میں بڑی تعداد عام لوگوں کی ہے۔ اسی طرح بچوں اور عورتوں کی بھی بڑی تعداد لقمہ اجل بن گئی ہے۔