اسرائیل کا غزہ کے سرحدی مکینوں کو علاقہ چھوڑنے کا حکم

راکٹ حملوں میں چار یہودی آباد کاروں کی ہلاکت، اسرائیل طیش میں آ گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

فلسطینی علاقے غزہ کی پٹی سے جنوبی اسرائیل پر داغے گئے ھاون راکٹوں کے حملے میں چار یہودی آباد کاروں کی ہلاکت کے بعد اسرائیلی فوج نے غزہ کے سرحدی علاقوں سے ہزاروں فلسطینیوں کو علاقہ خالی کرنے کے احکامات جاری کیے ہیں۔

فرانسیسی خبر رساں ایجنسی"اے ایف پی" کے مطابق فوج کی جانب سے مشرقی غزہ کی الشجاعیہ، زیتون اور جبالیا کالونیوں کے مکینوں سے کہا گیا ہے کہ وہ فوری طور اپنے مکانات خالی کرتے ہوئے وسطی غزہ کی طرف نکل جائیں تاکہ اس علاقے میں فوجی آپریشن کو وسعت دی جا سکے۔

قبل ازیں اسرائیلی میڈیا نے خبر دی تھی کہ غزہ کی پٹی سے جنوبی اسرائیل کی ایک یہودی کالونی پر فلسطنی مزاحمت کاروں کے داغے گئے"ہاون" راکٹ حملوں میں کم سے کم چار یہودی آباد کار ہلاک ہو گئے تھے۔

اسرائیلی ریڈیو، چینل 10 اور سرکاری ٹی وی کی رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ غزہ کی پٹی سے داغے گئے متعدد ہاون راکٹ اشکول کے مقام پر ایک کالونی میں جا گرے جس کے نتیجے میں کم سے کم چار یہودی آباد کارہلاک ہوئے ہیں۔

سرکاری ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق راکٹ حملوں میں غزہ سے چھ کلو میٹر دور 12 یہودی آباد کار زخمی بھی ہوئے ہیں، جنہیں فوری طور پر علاج کے لیے اسپتال منتقل کر دیا گیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں