اسرائیلی بمباری سے غزہ کا اکلوتا بجلی گھر تباہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

غزہ کی پٹی کا اکلوتا بجلی گھر ٹرو کے دن اسرائیلی بمباری سے تباہ ہو گیا۔ اس امر کا اعلان منگل کے روز غزہ کی پٹی میں محکمہ بجلی کے حکام نے کیا۔

پاور اتھارٹی کے ڈپٹی چیئرمین فتحی الشیخ خلیل نے بتایا کہ منگل کی شب اسرائیلی بمباری کے باعث غزہ کے اکلوتے بجلی گھر نے کام کرنا مکمل طور پر چھوڑ دیا۔ انہوں نے بتایا گولا باری سے بجلی گھر کا سٹیم جنریٹر تباہ ہو گیا۔ بمباری کے نتیجے میں بجلی گھر کے آئل ڈپو میں آگ لگ گئی جس کے بعد علاقے سے شعلے آسمان کی جانب اٹھتے ہوئے دیکھے گئے۔

اسرائیلی بمباری کا نشانہ بننے والے غزہ کے پاور کمپلیکس میں بمباری کے بعد آگ لگ گئی۔ شہری دفاع کا عملہ اور آگ بجھانے والی گاڑیاں بھی متاثرہ علاقے تک نہیں پہنچ سکیں جس سے سب کچھ جل کر خاک ہو گیا۔

الشیخ خلیل نے مزید بتایا کہ اسرائیل سے آنے والی بجلی سپلائی کی لائنز بھی گولا باری سے بری طرح متاثر ہوئی ہیں۔ اسرائیل سے غزہ کی پٹی کو بجلی فراہمی کی دس میں پانچ مین لائنز تباہ ہو چکی ہیں۔ ان تباہ شدہ لائنز کی بحالی کے لئے عملے کو ان تک رسائی حاصل نہیں۔

جزوی طور پر آپریشنشل غزہ کے اکلوتے بجلی گھر سے اٹھارہ لاکھ اہالیاں غزہ کو 65 میگا واٹ بجلی ملتی ہے۔ علاقے کو 120 میگا واٹ بجلی اسرائیلی علاقوں سے ملتی ہے جبکہ 22 میگا واٹ پاور مصر دیتا ہے۔ پاور اتھارٹی کی ویب سائٹ کے مطابق غزہ کی پٹی کے علاقے کی بجلی کی ضروریات 280 سے 320 میگا واٹ کے درمیان ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں