سیناء میں مصری فوج کے دو اعلی افسر ہلاک

انصار بیت المقدس بے فوجی افسروں کے قتل کی ذمہ داری قبول کر لی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

مصر کے علاقے سینا میں سرگرم تنظیم انصاربیت المقدس نے مصری فوج کے دو اعلی افسروں کو قتل کرنے کی ذمہ داری قبول کرلی ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق تنظیم کی جانب سے جاری ایک بیان میں بتایا گیا ہے کہ انصار بیت المقدس کے جنگجوؤں نے گذشتہ جمعہ کو شمالی سیناء میں الشیخ زوید کے مقام پر فوج اور پولیس کے دو بریگیڈئر جنرل کو قاتلانہ حملے میں ہلاک کیا ہے۔

تنظیم کا کہنا ہے کہ جنگجوؤں کے حملے میں مارے جانے والے ایک فوجی عہدیدار کی شناخت فوج کے بریگیڈئر جنرل عمروفتحی اور پولیس کے بریگیڈئر جنرل محمد سلمی عبد ربہ کے ناموں سے کی گئی ہے۔ دونوں افسران اسرائیل کی سرحد پر تعینات تھے جو براہ راست فلسطینی غزہ کی پٹی کی ناکہ بندی کے احکامات بھی جاری کر رہے تھے۔ بیان کے ساتھ بریگیڈیئر جنرل عمرو فتحی کا ذاتی پستول بھی دکھایا ہے جسے مقبول فوجی عہدیدارکے قبضے سے حاصل کیا گیا ہے۔

خیال رہے کہ مصری فوج نے گذشتہ جمعہ کو اپنے دو سینیئر فوجی افسروں کی عسکریت پسندوں کے قاتلانہ حملے میں مارے جانے کی اطلاع دی تھی۔ یہ واقعہ اس وقت پیش آیا جب فوجی افسر ایک کار کے ذریعے الشیخ زوید کے مقام سے گذر رہے تھے کہ نقاب پوش مسلح حملہ آورں نے ان پر فائرنگ کر دی تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں