.

اسرائیل کا تیسری مرتبہ غزہ میں یو این سکول پر حملہ

حملے میں دس فلسطینی شہید، غزہ سے اسرائیلی فوج کا انخلاء

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

غزہ کے میڈیکل ذرائع اور عینی شاہدین نے بتایا ہے کہ اتوار کے روز غزہ میں اقوام متحدہ کے ایک سکول پر اسرائیلی حملے میں کم سے کم دس فلسطینی شہید اور متعدد دیگر زخمی ہو گئے۔

ذرائع نے برطانوی خبر رساں ایجنسی 'رائیٹرز' کو بتایا کہ اسرائیلی لڑاکا جہاز سے داغے جانے والا میزائل جنوبی غزہ کے علاقے رفح میں اقوام متحدہ کے بوائز سکول کے مرکزی دروازے پر گرا۔

حملے کے وقت سیکڑوں فلسطینی اس سکول میں پناہ لئے ہوئے تھے۔ اسی علاقے میں اسرائیلی فوج فلسطینی مزاحمت کاروں کے خلاف جنگ لڑ رہی ہے۔

غزہ سے اسرائیلی فوج کا انخلاء

ادھر اسرائیلی فوج نے اتوار کے روز غزہ کی پٹی سے اپنی بری فوج کے کچھ دستے باہر نکال کر ان کی جگہ تازہ دم فوج متعین کی ہے۔ اسرائیلی فوجی ترجمان کے مطابق غزہ میں فوجی کارروائی جاری ہے۔

فوجی ترجمان لیفٹیننٹ کرنل پیٹر لیرنیر کا کہنا تھا کہ ہم نے غزہ کی پٹی سے کچھ فوجی نکالے ہیں اور ان کی جگہ نئے تازہ دم دستے تعنیات کیے ہیں۔ ہم نے اس مرحلے پر کچھ نئی پوزیشنز پر فوج لگائی ہے۔" انہوں نے یہ بات زور دیکر کہی کہ 'غزہ کے خلاف فوجی کارروائی جاری ہے۔"

دوسری جانب غزہ میں وزارت صحت کے ترجمان اشرف القدرہ نے بتایا کہ اتوار کے روز غزہ کی پٹی کے مختلف علاقوں میں ہونے والے حملوں میں شہید ہونے والے افراد کی تعداد 34 ہو گئی۔ اس سے پہلے القدرہ نے غزہ کے مختلف علاوہ پر اسرائیلی حملوں میں شہید ہونے والوں کی تعداد آٹھ بتائی تھی۔

اشرف القدرہ کے مطاطق "دو فلسطینی غزہ کے شمالی ضلع جبالیا میں اسرائیلی فضائی حملے میں شہید ہوئے جبکہ جنوبی علاقے رفح کے دو مختلف مقامات پر حملوں میں چھ فلسطینی جام شہادت نوش کر گئے۔

یاد رہے اسرائیلی فوج نے غزہ میں جمعہ کے روز حماس کے زیر استعمال سرنگوں کی تلاش کے لئے کئے جانے والے آپریشن کے دوران لاپتا ہونے والے فوجی افسر لیفٹیننٹ ہارڈ گولڈن کے مارے جانے کی تصدیق کر دی جس کے بعد غزہ کی پٹی پر مسلط کی جانے والی جنگ کے آغاز سے ابتک ہلاک ہونے والے اسرائیلی فوجیوں کی تعداد 64 ہو گئی ہے۔