.

''غزہ جنگ بندی میں توسیع کا کوئی سمجھوتا نہیں ہوا''

مصر کی ثالثی میں قاہرہ میں اسرائیل اور فلسطینیوں کے درمیان بات چیت بے نتیجہ رہی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصر کے دارالحکومت قاہرہ میں مقیم حماس کے ایک سینیرعہدے دار نے کہا ہے کہ اسرائیل اور فلسطینیوں کے درمیان غزہ میں 72 گھنٹے سے جاری جنگ بندی میں توسیع کے لیے کوئی سمجھوتا نہیں ہوا ہے۔

اسرائیل اور حماس کے درمیان مصر کی ثالثی میں منگل سے تین روز کے لیے جنگ بندی ہوئی تھی۔حماس کے سینیر رہ نما موسیٰ ابو مرزوق کے مذکورہ بیان سے چند گھںٹے قبل اسرائیل نے کہا تھا کہ وہ جمعہ تک جنگ بندی میں توسیع کے لیے تیار ہے اور اس نے اس سلسلے میں بات چیت کے لیے اپنا ایک وفد بھی قاہرہ بھِیجا تھا۔اس وفد نے مصرکی ثالثی میں فلسطینی مذاکرات کاروں سے جنگ بندی میں توسیع کے سلسلہ میں بات چیت کی ہے۔

موسیٰ ابو مرزوق نے اپنے ٹویٹر اکاؤنٹ پر جاری کردہ ایک بیان میں کہا ہے کہ ''جنگ بندی میں توسیع کے لیے کوئی سمجھوتا نہیں ہوا ہے''۔موسیٰ ابو مرزوق حماس کے سیاسی قائدین میں سے ایک ہیں لیکن وہ جماعت کے اندرونی حلقے میں شمار نہیں ہوتے ہیں اور وہ جنگ بندی کے لیے بات چیت کے دوران مصر کے ساتھ براہ راست معاملہ کاری کرتے رہے ہیں۔