"مبارک کی بیدخلی انقلاب نہیں، سازش تھی"

معزول صدر وکیل نے مصری دستور، عوام کی توہین کی ہے: ماہرین

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

مصر کے معروف وکیل فرید الدیب نے حسنی مبارک کی اقتدار سے علاحدگی کو 'انقلاب کے بجائے سازش' کا نتیجہ قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ 'سازش کرنے والوں نے ملک میں پائی جانے والی بے چینی کا فائدہ اٹھا لیا۔ مقصد اصلاحات نہیں بلکہ صرف افراتفری پھیلانا تھا۔ '

فرید الدیب نے اس امر کا اظہار حسنی مبارک کے خلاف مقدمے کی سماعت کے موقع پر عدالت میں دلائل دیتے ہوئے کیا ہے۔ انہوں نے اس بارے میں سابق ملٹری پولیس چیف، قومی سلامتی کے موجودہ سربراہ، سابق وزیر داخلہ احمد جمال دینی کا حوالہ بھی دیا۔

حسنی مبارک کے وکیل فرید الدیب کے اس ،وقف سے ملک میں ایک نئی بحث کا آغاز ہو گیا ہے کیونکہ اس پر ملک کے معروف کالم نگار محمد رشدی نے اس حوالے لکھا ہے کہ مصری دستور کے مطابق 25 جنوری کو ایک عظیم انقلاب آیا تھا۔

رشدی لکھتے ہیں: ''اگر دیب کا کہنا درست مان لیا جائے تو یہ ضروری ہو جائے گا کہ دستور کی اصلاح کی جائے۔ نیز سازش میں حصہ لینے کے الزامات ریاست کی توہین کے مترادف ہیں۔ حقیقت یہ ہے کہ فرید الدیب نے 25 جنوری کے انقلاب ایک عزت والا انقلاب کہا تھا۔

کہ اس کی حسنی مبارک نے بھی تائید کرتے ہوئے حسنی مبارک نے عوام کے مطالبات کو تسلیم کیا تھا اور احتجاج روکنے کے لیے اقدامات نہیں کیے تھے۔ کالم نگار محمد رشدی کے مطابق دستور کے آرٹیکل 98 بی کہتا ہے کہ کہ دستوری اصولوں کی توہین کی سزا جیل ہے۔ اس جرم میں قید کے علاوہ جرمانہ یا دونوں سزائیں بھی ہو سکتی ہیں۔

عرب نیٹ ورک فار ہیومن رائٹس انفارمیشن کے ڈائریکٹر جمال عید نے کہا ہے کہ ''دیب نے ملکی دستور کی توہین کی ہے اور یہ ایک جرم ہے کیونکہ ملکی دستور انقلاب کو عزت دیتا ہے۔''

سیاسیات کے پروفیسر مصطفی کمال سید نے حسنی کیس کی سماعت کرنے والے جج کو مورد الزام ٹھہرایا کہ انہوں نے دستور کی توہین کا موقع پر نوٹس کیوں نہ لیا اور دیب کو آئین کے خلاف باتیں کرنے پر کیوں نہ روکا؟

سابق رکن پارلیمنٹ جمال زہران نے اس بارے میں کہا ''دیب نے مصری عوام کی توہین کی ہے ۔'' انقلاب پارٹی کے سرپرست کا کہنا تھا کہ دیب نے مصری نوجوانوں کی قربانیوں پر حرف گیری کی ہے۔

دوسری جانب وکیل فرید الدیب نے اپنے موقف پر اصرار کیا اور کہا ''میرے موقف کی مخالفت کرنے والوں کو دستور کا کچھ پتہ نہیں ہے۔''

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں