.

لبنان: نو منتخب مفتی اعظم کی طرف سے انتہا پسندی کی مذمت

شیخ عبداللطیف دیریان کو منتخب ہونے پر سعدالحریری کی مبارک باد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

لبنان کے نئے مفتی اعظم شیخ عبداللطیف دیریان نے اپنے انتخاب کے بعد گفتگو کرتے ہوئے خطے میں پھیلی انتہا پسندی کی مذمت کی ہے اور کہا ہے '' میرے بطور مفتی اعظم انتخاب عوام کی سوچ کا پختہ اظہار ہو گیا ہے کہ اس مسئلے سے نمٹا جائے اور اس لعنت کا تدارک کیا جائے۔ ''

شیخ عبداللطیف دیریان کے منتخب ہونے پر انہیں تین سالہ خود ساختہ جلاوطنی کے بعد واپس وطن آنے والے سابق وزیر اعظم سعد الحریری نے بھی مبارک باد دی ہے۔ خیال رہے نو منتخب مفتی اعظم جنہوں نے 93 ووٹوں میں سے 74 ووٹ لیے ہیں، 15 ستمبرسے اپنا منصب باضابطہ سنبھال لیں گے۔

نو منتخب مفتی اعظم کے مدمقابل سنی کورٹ کے سربراہ احمد درویش الکردی نے 9 ووٹ حاصل کیے ہیں۔ شیخ عبداللطیف دیریان نے کہا'' ہمارا مذہب اعتدال پسندی، برداشت اور بقائے باہمی پر یقین رکھنے والا مذہب ہے۔''

سعدالحریری نے کہا ''آج کا دن رحمت کا دن ہے کہ اس نے ہمیں لبنان میں متحد کر دیا ہے، انہوں نے نو منتخب مفتی اعظم سے اپیل کی کہ وہ مسلمانوں کے اتحاد اور اتفاق کو بڑھانے کی کاوش کریں گے۔'' اس سلسلے میں دارالفتاوی کی ذمہ داری ایک عظیم ذمہ داری ہے۔ ''

سعدالحریری نے مزید کہا ہے '' ہم ملک کے اندر مٹھی بھر انتہا پسندوں کی طرف سے اسلام اور مسلمانوں کو اپنے شراکت داروں کے ساتھ تصادم پر مجبور کیے جانے کو قبول نہیں کیا جائے گا۔