.

اسرائیل اور حماس کے مذاکرات فاصلہ کم نہ ہو سکا

اسرائیلی وزیراعظم سکیورٹی کابینہ سے دوبارہ مشورہ کریں گے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اسرائیل اور حماس کے درمیان مصر کی مدد سے ہونے والے بالواسطہ مذاکرات میں منگل کے روز کوئی پیش رفت ممکن نہیں ہو سکی ہے اور فریقین کے موقف میں فاصلہ کم کرنے میں مشکلات کا سامنا ہے۔

ایک سینئیر اسرائیلی ذمہ دار کے مطابق '' اب بھی دو طرف فاصلہ بہت زیادہ ہے، اس لے مذاکرات آگے نہیں بڑھ سکے ہیں۔ '' اسرئیلی ذمہ دار نے یہ بات جاری مذاکرات کے دوسرے روز کہی ہے۔ پہلے روز ان مذاکرات کا دورانیہ دس گھنٹوں پر محیط رہا تھا۔

ان مذاکرات کے ذریعے کوشش کی جا رہی ہے کہ فریقین میں لمبے دورانیے کے لیے جنگ بندی ممکن ہو جائے۔ واضح رہے اسرائیل کی طرف سے دفاعی کنارے کے نام سے مسلط کردہ جنگ کے دوران آٹھ جولائی سے اب تک دو ہزار سے زائد فلسطینی شہید ہو چکے ہیں۔ جبکہ اسرائیل کے 65 فوجیوں سمیت 67 افراد ہلاک ہوئے ہیں۔

توقع ہے کہ اسرائیلی وزیر اعظم بنجمن نیتن یاہو اس سلسلے میں آج سہ پہر اپنی سکیورٹی کابینہ سے ملاقات کریں گے۔

فلسطینی نمائندے کے مطابق مذاکرات کا معاملہ بہت سنجیدہ ہے، اسرائیل کا اصرار ہے کہ حماس کو غیر مسلح کیا جائے۔ فلسطینی نمائندے کے مطابق ان مذاکرات میں اہم ایشو غزہ کے آٹھ سال پر محیط محاصرے کا خاتمے کا معاملہ بھی شامل ہے۔

مصری رابطہ کاروں کے لیے بھی فریقین میں اتفاق ایک مشکل ترین امر ہے، تاہم کوششیں جاری ہیں اور مصری رابطہ کار دونوں فریقوں کو رام کرنے میں اپنا اکردار ادا کر رہے ہیں۔