.

شامی باغیوں اور داعش میں جھڑپیں،39 جنگجو ہلاک

داعش کا شمالی صوبے حلب کے متعدد قصبوں اور دیہات پر قبضہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شام کے شمالی صوبے حلب میں دولت اسلامی عراق وشام (داعش) سے تعلق رکھنے والے جنگجوؤں اور شامی باغیوں کے درمیان شدید جھڑپیں ہوئی ہیں جن میں طرفین کے انتالیس جنگجو مارے گئے ہیں۔

بیروت میں قائم شامی آبزرویٹری برائے انسانی حقوق نے اطلاع دی ہے کہ بدھ کو لڑائی میں اکتیس باغی اور داعش کے آٹھ جنگجو مارے گئے ہیں اور اس کے بعد داعش کے جنگجوؤں نے صوبہ حلب کے چھے دیہات پر قبضہ کر لیا ہے۔

رائیٹرز کے مطابق داعش کے جنگجوؤں نے متحارب اسلامی گروپوں کے ساتھ لڑائی کے بعد صوبہ حلب کے متعدد دیہات اور قصبوں پر قبضہ کر لیا ہے۔ان میں حلب سے پچاس کلومیٹر شمال مشرق میں واقع ترکمانوں کے دوقصبے بارح اور اخترین بھی شامل ہیں۔

اخترین سے ٹویٹر کے ذریعے ملنے والی ایک اطلاع میں کہا گیا ہے کہ اس قصبے کا دفاع کرتے ہوَئے داعش کے جنگجوؤں کے ساتھ لڑائی میں دو افراد مارے گئے ہیں۔ان میں ایک سولہ سالہ لڑکا ہے لیکن اس اطلاع کی آزاد ذرائع سے تصدیق ممکن نہیں ہے۔