.

اسرائیل اور حماس میں مزید 5 دنوں کے لیے جنگ بندی

پہلے سے جاری جنگ بندی کے دوران غزہ سے راکٹ حملے ہوئے: اسرائیل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اسرائیل کی طرف سے غزہ پرآٹھ جولائی سے مسلط کر دہ جنگ میں ایک مرتبہ پھر 5 دن کے لیے جنگ بندی پر اتفاق ہو گیا ہے۔

72 گھنٹوں کیلیے اس طے پانے والی جنگ بندی کے لیے مصری حکام کی مدد سے دو دن سے قاہرہ میں بالواسطہ مذاکرات جاری تھے۔

اس سے پہلے ایک تین روزہ جنگ بندی مقامی وقت کے مطابق رات کے نو بجے ہی مکمل ہوئی تھی جس کے بعد نئی جنگ بندی شروع ہو گئی ہے۔ حماس کے ایک سینئیر ذمہ دار عزت الرشق نے اس سے پہلے ہی بتا دیا تھا کہ اسرائیل کے ساتھ ایک اور جنگ بندی طے پا گئی ہے۔

اسرائیلی پولیس حکام نے کچھ دیر قبل دعوی کیا تھا رات نو بجے مکمل ہونے والی جنگ بندی سے محض دو گھنٹے پہلے غزہ سے اسرائیل پر راکٹ فائر کیا گیا تھا۔ تاہم حماس نے ایسے کسی بھی راکٹ حملے کی صداقت سے انکار کیا ہے۔

اسرائیلی پولیس کے ترجمان لوبا سامری کے مطابق غزہ کی طرف سے یہ راکٹ بدھ کے روز اسرائیل کے ایک کھلے علاقے میں گرا ہے۔ تاہم اس راکٹ حملے سے کسی کے ہلاک یا زخمی ہونے کی کوئی اطلاع نہیں دی گئی ہے۔

بعد ازاں اسرائیلی فوج نے دعوی کیا ہے کہ کم از کم پانچ راکٹ اسرائیل پر فائر کیے گئے ہیں۔ یہ راکٹ مبینہ طور پر وقفے وقفے سے جنگ بندی کے مکمل ہونے سے پہلے فائر ہوئے تھے۔

اسرائیلی فوج نے یہ بھی کہا ہے کہ اس نے غزہ میں راکٹ فائر کرنے والی جگہوں کو نشانہ بنایا ہے۔