شام میں بھی داعش کےخلاف کارروائی کی جائے: اپوزیشن

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

شام میں صدر بشار الاسد کے مخالف اتحاد کے سربراہ ھادی البحرہ نے اقوام متحدہ سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ شام میں سرگرم دولت اسلامی'داعش' کے خلاف کارروائی کے لیے فوری مداخلت کرے۔ ان کا کہنا تھا کہ عالمی برادری اگر عراق میں داعش کے جنگجوؤں کی سرکوبی کے لیے مداخلت کر سکتی ہے تو شام میں ایسا کیوں نہیں ہو سکتا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق شامی اپوزیشن کے سربراہ ھادی البحرہ نے ترکی میں ایک نیوز کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے شام میں داعشی جنگجوؤں کے ہاتھوں نہتے شہریوں کے قتل عام کی شدید مذمت کے ساتھ عالمی برادری کی خاموشی کو مجرمانہ غفلت قرار دیا۔ انہوں نے کہا کہ داعش کے جنگجو شام میں انسانیت کےخلاف جنگی جرائم کے مرتکب ہو رہے ہیں اور عالمی برادری بالخصوص اقوام متحدہ اس پر خاموش تماشائی بنی ہوئی ہے۔

ھادی البحرہ کا کہنا تھا کہ میں اقوام متحدہ اور آزادی پر یقین رکھنے والے ملکوں بالخصوص امریکا سے یہ درمندانہ اپیل کرتا ہوں کہ وہ جس طرح عراق میں سرگرم دہشت گردوں سے نمٹنے کے لیے کوششیں کر رہے ہیں شام کے مظلوم عوام کی بھی مدد کریں کیونکہ جو لوگ عراق اور کردستان کے دشمن ہیں وہی شام کے بھی دشمن ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ ہمارا دشمن ایک ہے عالمی برادری دوہرا معیار ترک کرے۔

ایک سوال کےجواب میں شامی اپوزیشن لیڈر ھادی البحرہ نے کہا کہ ہم عرصے سے عالمی برادری سے شام میں فوری مداخلت کرنے اور داعشی اور اسدی مظالم سے شامی قوم کو نجات دلوانے کا مطالبہ کرتے آ رہے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں