عراق: کرد فورسز کا موصل ڈیم پر دوبارہ قبضہ

امریکی طیاروں کی تباہ کن بمباری کے بعد داعش کے جنگجو پسپا ہو گئے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

عراق کے خودمختار علاقے کردستان کی سکیورٹی فورسز البیش المرکہ نے امریکی طیاروں کے دولت اسلامی (داعش) کے جنگجوؤں اور ٹھکانوں پر تباہ کن حملوں کے بعد ملک کے سب سے بڑے ڈیم پر دوبارہ قبضہ کر لیا ہے۔

داعش کے جنگجوؤں نے اسی ماہ کے آغاز میں موصل ڈیم پر قبضہ کیا تھا اور وہاں سے البیش المرکہ کے اہلکاروں کو مار بھگایا تھا۔البیش المرکہ کے ایک افسر اور کردستان کی ایک سیاسی جماعت کے دو عہدے داروں نے اتوار کو فرانسیسی خبر رساں ادارے 'اے ایف پی' سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا ہے کہ کرد فورسز نے موصل ڈیم پر دوبارہ قبضہ کر لیا ہے۔ اس ڈیم سے عراق کے شمالی صوبہ نینویٰ کے بیشتر علاقے کو بجلی اور کاشتکاری کے لیے پانی مہیا ہوتا ہے۔

قبل ازیں اتوار کو امریکی فوج نے اس بات کی تصدیق کی تھی کہ اس نے ہفتے کے روز کردستان کے علاقائی دارالحکومت اربیل اور موصل ڈیم کے نزدیکی علاقوں میں داعش کے ٹھکانوں اور گاڑیوں پر نو فضائی حملے کیے تھے تاکہ کرد فورسز داعش کے جنگجوؤں سے دوبارہ اس ڈیم کا قبضہ واپس لے سکیں۔

امریکا کی مرکزی کمان (سینٹ کام) کی جانب سے جاری کردہ بیان کے مطابق لڑاکا جیٹ اور بغیر پائیلٹ جاسوس طیاروں نے ان حملوں میں داعش کی چار بکتر بند گاڑیوں اور دو حمویوں سمیت دس دوسری گاڑیوں کو تباہ کردیا تھا یا انھیں نقصان پہنچایا تھا۔ سینٹ کام نے یہ حملے عراق میں انسانی امدادی کوششوں اور امریکی اہلکاروں کے تحفظ کے لیے کیے تھے۔

کرد فورسز کے میجر جنرل عبدالرحمان قرینی کے مطابق البیش المرکہ نے امریکا کی فضائی مدد سے ڈیم کمپلیکس کی مشرقی جانب دوبارہ کنٹرول حاصل کر لیا ہے۔ ان کے بہ قول لڑائی میں داعش کے متعدد جنگجو مارے گئے ہیں۔ اب یہ معلوم نہیں کہ یہ جنگجو امریکی بمباری میں مارے گئے ہیں یا وہ کرد فورسز کے ساتھ لڑائی میں ہلاک ہوئے ہیں۔

امریکی صدر براک اوباما نے گذشتہ ہفتے شمالی عراق میں داعش کے ٹھکانوں پر فضائی حملوں کی اجازت دی تھی۔ اس کے بعد سے البیش المرکہ کی داعش کے خلاف جنگ میں یہ ایک اہم کامیابی ہے۔

واضح رہے کہ کرد فورسز کو داعش کے جنگجوؤں کے ساتھ لڑائی میں شمالی عراق کے بہت سے شہروں اور قصبوں میں ہزیمت سے دوچار ہونا پڑا تھا اور داعش نے ان کے کنٹرول والے علاقوں پر قبضہ کر لیا تھا۔اب شمالی عراق میں امریکی فضائی بمباری کے بعد سے داعش کی فتوحات کا سلسلہ تھم گیا ہے اور کرد فورسز اس کا فائدہ اٹھا کردوبارہ پیش قدمی کر رہی ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں