.

غزہ میں طویل المیعاد فائر بندی کا امکان روشن ہو گیا

فریقین عارضی جنگ بندی میں 24 گھنٹے کی توسیع پر راضی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصری حکومت کی ثالثی کے تحت فلسطینی مزاحمتی گروپوں اور اسرائیل کے درمیان غزہ کی پٹی میں جنگ بندی کے لیے بالواسطہ بات چیت میں مثبت پیش رفت دیکھنے آئی ہے۔ فریقین نے عارضی جنگ بندی میں مزید 24 گھنٹے کی توسیع پر اتفاق کیا ہے۔ بات چیت کا عمل ابھی جاری ہے اور طوی المیعاد جنگ بندی کے امکانات بھی روشن دکھائی دے رہے ہیں۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق مصری حکومت اور فلسطینی تنظیم اسلامی تحریک مزاحمت"حماس" نے جنگ بندی میں ایک روز کی توسیع کی تصدیق کی ہے تاہم حماس نے اسرائیل کو کڑی تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے صہیونی حکومت پر جنگ بندی بات چیت میں ہٹ دھرمی کا مظاہرہ کرنے کا بھی الزام عائد کیا ہے۔

اسی سیاق میں حماس کے سیاسی شعبے کے سینئیر رُکن اور مذاکراتی وفد میں شامل رہ نما عزت الرشق نے "ٹیوٹر" پر ایک مختصر بیان میں کہا ہے کہ اسرائیل کے غیر لچک دار طرز عمل کے باعث انہیں جنگ بندی سے متعلق بات چیت میں مشکلات درپیش رہی ہیں، تاہم فریقین نے ثالث[مصر] کی درخواست پر بات چیت کو مزید موقع دینے کے لیے عارضی جنگ بندی میں چوبیس گھنٹے کی توسیع پر اتفاق کیا ہے۔

خبر رساں ایجنسی" اے ایف پی" کے مطابق اسرائیلی حکومت کے ایک عہدیدار نے اپنی شناخت ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتایا کہ منگل اور بدھ کی درمیانی شب ختم ہونے والی جنگ بندی کی مدت میں چوبیس گھنٹے کی توسیع کی گئی ہے۔ اسرائیل کو بھی اس توسیع سے اتفاق ہے۔

قبل ازیں فلسطینی حکومت کے ایک مصدقہ ذریعے نے "العربیہ" کو بتایا تھا کہ فریقین میں غزہ کی پٹی میں جنگ بندی سے متعلق مذاکرات میں اہم پیش رفت ہوئی ہے۔ ابتدائی طور پر فریقین نے رفح کراسنگ کی نگرانی سنہ 2006ء میں حماس کے غزہ میں کنٹرول سے پہلے والی پوزیشن پر بحال کرنے اور غزہ کی پٹی پر عائد اسرائیلی پابندیاں اٹھانے پر اتفاق کیا ہے۔ غزہ کی پٹی میں لاپتا ہونے والے دو اسرائیلی فوجیوں کی زندہ یا مردہ اسرائیل کو حوالگی، غزہ میں ہوائی اڈے اور بندرگاہ کے مطالبات پر ایک ماہ بعد غور کیا جائے گا۔

ادھر اسرائیل کے عبرانی اخبار "ہارٹز" نے بھی فلسطینی اتھارٹی کے ایک اہم ذریعے کے حوالے سے اطلاع دی ہے کہ فریقین غزہ کی پٹی میں مستقل جنگ بندی پر متفق ہو گئے ہیں۔ فلسطین کی کئی نیوز ویب سائیٹس نے بھی اس خبر کی تصدیق کی ہے۔

خیال رہے کہ غزہ کی پٹی میں وسط جولائی کے بعد سے ایک ماہ تک جاری رہنے والی اسرائیلی فوجی کارروائی کے بعد اگست کے اوائل میں مصر کی مساعی سے حماس اور اسرائیل کے درمیان جنگ بندی کی کوششیں شروع ہوئی تھیں۔ جنگ بندی سے متعلق مذاکرات پچھلے دو ہفتے سے مصر کی نگرانی میں جاری ہیں۔ مذاکرات میں فریقین کے اپنے اپنے موقف پر ڈٹے رہنے کے باعث کئی بار تعطل بھی پیدا ہوا، تاہم اب طویل المیعاد جنگ بندی کی امید پیدا ہوئی ہے۔