.

مصر:اسرائیل کے لیے جاسوسی،اردنی کو 10 سال قید کی سزا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

قاہرہ کی ایک عدالت نے اسرائیل کے لیے جاسوسی کے جرم میں ایک اردنی شہری کو دس سال قید کی سزا سنائی ہے اور اسی مقدمے میں ماخوذ ایک اسرائیلی جاسوس کو اس کی عدم موجودگی میں عمر قید کی سزا سنائی ہے۔

اردن سے تعلق رکھنے والے ٹیلی کام انجنیئر بشار ابراہیم ابو زید کو اسرائیل کے لیے جاسوسی کے الزام میں اپریل 2011ء میں گرفتار کیا گیا تھا۔اس پر مصری انجنیئروں کو اسرائیل کے لیے جاسوسی کے مقصد کی غرض بھرتی کرنے کا الزام عاید کیا گیا تھا اور اس نے ان مصری انجنیئروں کو اسرائیل کے لیے فون کال ریکارڈ کرنے کے کے لیے بھرتی کیا تھا۔

استغاثہ نے مفرور اسرائیلی پر صہیونی ریاست کی خفیہ ایجنسی موساد کے لیے کام کرنے کا الزام عاید کیا تھا۔ابو زید کے خلاف اکتوبر 2011ء میں مقدمے کی سماعت کا آغاز ہوا تھا۔تب اس نے یہ دعویٰ کیا تھا کہ وہ بے گناہ ہے۔اس نے استغاثہ پر الزام عاید کیا تھا کہ اس نے تفتیش کے دوران اس کے بتائے گئے جوابات میں تحریف کی تھی۔

مصر میں عمرقید کی مدت پچیس سال ہے۔واضح رہے کہ مصر اور اردن کے اسرائیل کے ساتھ امن معاہدے کر رکھے ہیں اور اس کے ساتھ ان دونوں ممالک کے سفارتی تعلقات استوار ہیں۔