اسرائیلی بمباری، القسام بریگیڈ کے تین کمانڈروں سمیت آٹھ شہید

تل ابیب آنے والے مسافر طیاروں کی پروازوں میں مختصر تعطل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

حماس کے عسکری بازو نے جمعرات کو اعلان کیا ہے کہ اسرائیل کے تازہ حملوں میں اس کے تین سینئیر کمانڈر شہید ہو گئے ہیں۔ یہ تینوں کمانڈر طلوع آفتاب سے پہلے رفح میں ہونے والی اسرائیلی بمباری سے ہوئی ہے۔ ان تین کمانڈروں سمیت آٹھ دوسرے لوگ بھی لقمہ اجل بن چکے ہیں۔

عزالدین القسام بریگیڈ کی طرف سے جاری کیے گئے ایک بیان میں ان تین نشانہ بننے والے کمانڈروں کے نام محمد ابو شمالہ، رائد العطار اور محمد برھوم شامل ہیں۔ ہنگامی خدمات کے شعبے کے ترجمان اشرف القدرہ نے بتایا آٹھ فلسطینیوں کی شہادت اسرائیل کے فضائی حملے کے نتیجے میں ہوئی ہے۔

عینی شاہدوں کا کہنا ہے کہ بمباری سے چار منزلہ عمارت مکمل طور پر تباہ گئی، اس عمارت کو اسرائیلی طیراوں کے یکے بعد دیگرے کیے جانے والے حملوں میں ہدف بنایا گیا تھا۔

اس سے پہلے فلسطینی پولیس نے بتایا تھا کہ چھ افراد کے وقت کیے گئے ایک حملے میں شہید ہوئے ہیں۔ پولیس نے بھی رفح کے علاقے میں چار منزلہ عمارت کے تباہ ہونے کی تصدیق کر دی ہے اور کہا ہے کہ ریسکیو ورکر موقع پر پہنچ کر زخمیوں کی مدد کر رہے ہیں۔

واضح رہے اسرائیلی فوج کے مطابق یہ کارروائی اسرائیل کی طرف سے بدھ کی رات کیے گئے 20 حملوں میں سے ایک تھی۔ اسرائیل کا کہنا ہے کہ یہ حملے راکٹ حملوں کے جواب میں کیے گئے ہیں۔

دریں اثناء القسام بریگیڈ کے ترجمان نے تل ابیب کے لیے آنے والے غیر ملکی مسافر طیاروں سے متعلق کمپنیوں کو خبر دار کیا تھا کہ ان کی آمدورفت متاثر ہو سکتی ہے۔

اس کے مقابلے میں اسرائیلی ایوی ایشن کے ترجمان نے نے کہا بدھ کے روز صرف دس منٹ کے لیے طیاروں کی آمدو رفت متاثر ہوئی تھی اب بالکل نارمل ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں